ملتان: زہریلی شراب پینے والے مزید 7 افراد ہلاک‘ تعداد 37 ہو گئی

24 دسمبر 2009
ملتان (نمائندہ نوائے وقت) ملتان میں زہریلی شراب پینے سے مزید 7 افراد ہلاک ہو گئے ہیں جن میں ایک خاتون بھی شامل ہے۔ ہلاک ہونیوالوں کی تعداد 37 ہو گئی ہے۔ جبکہ دوسری جانب سٹی پولیس آفیسر ملتان سید سعود عزیز نے نمائندہ نوائے وقت کے رابطہ کرنے پر بتایا کہ زہریلی شراب پینے سے نشتر ہسپتال ملتان میں 17 افراد کی ہلاکت رپورٹ ہوئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ زہریلی شراب کی فروخت کرنیوالے ملزم محبوب اور رمضان کو اس وقوعہ سے قبل ناکے پر پکڑ کر ایک ہزار روپے رشوت کے عوض چھوڑنے والے پولیس کانسٹیبل یونس گجر کو گرفتار کر کے اسکے خلاف قتل کی دفعہ 302 کے تحت ایف آئی آر درج کر دی گئی ہے جبکہ اس مکروہ کاروبار میں ملوث افراد کو قرار واقعی سزا دلوانے کیلئے خصوصی سیل قائم کر دیا گیا ہے جبکہ شراب فروشوں کے خلاف کریک ڈاﺅن جاری ہے اور شراب کی بڑی مقدار برآمد کر لی گئی ہے۔ جبکہ محلہ منظور آباد، شریف پورہ، عثمان پورہ اور دیگر علاقوں میں گذشتہ روز زہریلی شراب سے مرنے والے افراد کی رسم قل ادا کی گئی ۔ خواتین نے نوائے وقت کو بتایا کسی کو کیا بتائیں کہ مرنے والے نے شراب پی ہے جس کسی کو پتہ چلتا ہے تو وہ تعزیت کی بجائے طنز کے تیر بھی برساتے ہیں۔ معلوم ہوا ہے کہ مرنے والے متعدد افراد مزدور پیشہ تھے جن کی قل خوانی کا اہتمام عزیز محلے داروں نے رقم اکٹھی کر کے کیا تھا۔ اس موقع پر مرنے والے افراد کی رشتہ دار خواتین نے کہا کہ ہمارے ساتھ جو ہونا تھا ہو چکا اب بھی شراب کی فروخت جاری ہے۔ خدارا کوئی تو ان ظالموں کو نکیل ڈالے۔