پیپلز پارٹی پر قبضے میں ناکامی پر زرداری نے بےنظیر کو راستے سے ہٹا دیا: رانا ثناءاللہ

23 جون 2011
لاہور (اے این این) وزیر قانون پنجاب رانا ثناءاللہ خان نے کہا ہے کہ اگر سابق وزیراعظم بینظیر بھٹو کے قتل کی تفتیش صاف شفاف طریقے سے ہوئی تو عوام اور جیالے حیران رہ جائیں گے کہ ان کا خون کس کے ہاتھوں پر ہے؟ صدرآصف زرداری نے ایجنسیوں سے ملکر پیپلز پارٹی پر قبضہ کرنے کی منصوبہ بندی کی، ناکامی پر بینظیر بھٹو کو راستے سے ہٹا دیا گیا، جو جتنا کرپٹ ہے اتنا ہی آصف زرداری کے قریب ہے، وہ وقت گزر گیا جب اسٹیبلشمنٹ حکومت بناتی اور گراتی تھی، ایبٹ آباد‘ پی این ایس مہران بیس اور رینجرز کے واقعات کے بعد سب چہرے بے نقاب ہو گئے۔ بدھ کو پنجاب اسمبلی کے احاطے میں میڈیا سے گفتگو ہوئے رانا ثناءاللہ خان نے کہا کہ صدر زرداری کا بینظیر بھٹو کی سالگرہ کے موقع پر خطاب انتہائی مایوس کن اور ایک کرپٹ جیالے کا خطاب تھا‘ عوام اب ان کے بہکاوے میں نہیں آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ صدر زرداری کو ایجنسیوں اور لادین قوتوں کی پشت پناہی حاصل ہے ان کے بیان نے ثابت کر دیا کہ ان کی رہائی ایجنسیوں کے ساتھ مک مکا کے بعد ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ صدر زرداری نے پیپلز پارٹی پر قبضہ جمانے اور محترمہ کو سائیڈ لائن کرنے کی کوشش کی اور اس کا علم ہونے پر بینظیر بھٹو نے زرداری کو امریکہ میں ایک فلیٹ تک محدود کر دیا تھا۔