صومالی قزاقوں سے رہائی پانیوالے 4 پاکستانیوں سمیت 22 افراد آج کراچی پہنچیں گے

23 جون 2011
کراچی / مسقط (خصوصی رپورٹ + آئی این پی) مصدقہ ذرائع نے کہا ہے کہ آئی ایس آئی کے سربراہ لیفٹیننٹ جنرل شجاع پاشا مدد نہ کرتے تو صومالی قذاقوں کی قید سے 4 پاکستانیوں سمیت 22 افراد کی رہائی ممکن نہیں تھی۔ جنرل شجاع پاشا نے بھی انسانی جانیں بچانے میں اہم کردار ادا کیا۔ ذرائع کے رابطہ کرنے پر انصار برنی نے بھی تصدیق کی اگر شجاع پاشا مدد نہ کرتے تو مغویوں کی رہائی ممکن نہ تھی۔ یاد رہے کہ صومالی قذاقوں کی 11 ماہ قید میں رہنے والے مصری جہاز این وی سوئز کے 22 رکنی عملے میں 11 مصری‘ 6 بھارتی اور ایک سری لنکن باشندہ بھی شامل تھا۔ پاک بحریہ نے مصری جہاز سے تمام عملہ کو پی این ایس ذوالفقار پر منتقل کر دیا گیا تھا۔ دوسری طرف پی این ایس ذوالفقار پیر کو سلولہ بندرگاہ پہنچ گیا تھا مگر بحری طوفان کے باعث جہاز کا رخ دوبارہ کراچی کی طرف موڑ دیا گیا تھا اور بھارتی شہری بھی کراچی آنے پر مجبور ہو گئے ہیں۔ امکان ہے کہ آج (جمعرات) جہاز کراچی بندرگاہ پہنچ جائے گا۔ آئی این پی کے مطابق 11 مصری پہلے ہی روانہ ہو چکے ہیں جبکہ دیگر 11 افراد کی کراچی آمد کے حوالے سے تمام تیاریاں مکمل کر لی گئیں ہیں۔ کیپٹن وصی سمیت دیگر پاکستانیوں کے لواحقین نے بھرپور استقبال کی تیاریاں کر لی ہیں۔ 6 بھارتی اور ایک سری لنکن باشندے کو کل ان کے ممالک روانہ کیا جائیگا۔