زرداری تمہاری سازش اور سیاست نوڈیرو میں دفن کر دینگے: شہباز شریف

23 جون 2011
لاہور + نارووال + شکر گڑھ + ظفر وال (خبرنگار + خصوصی نامہ نگار + نامہ نگار) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کہا ہے کہ میک اپ اترنے کے بعد عوام نے آصف زرداری کا اصلی چہرہ دیکھ لیا ہے۔ انہوں نے اپنے ساتھ ان لوگوںکو ملایا ہے جنہوں نے پنجاب بنک اور این آئی سی ایل میں اربوں روپے کے ڈاکے ڈالے انہوں نے کہا کہ آپ ان کے سرغنہ ہو‘ قوم حساب لے گی ۔ ہم آپ کے پیٹوں سے رقوم نکلوائیں گے سوئس بنکوں میں عوام کے خون پسینے کی جمع کرائی گئی کمائی حاصل کرکے عوام کے قدموں پر نچھاور کریں گے انہو ںنے کہا صدر آصف زرداری محل سے باہر جھانکو قانون کے لمبے ہاتھ آپ کی گرفت کریں گے ۔ صدر آصف علی زرداری نے مقبول ترین لیڈر محمد نواز شریف پر کیچڑ اچھالا ہے۔ پاکستان اور پنجاب کے عوام کو کیچڑ کی بالٹی کا تحفہ دیا۔ یہ ان کی بھول ہے کہ وہ سازش میں کامیاب ہو جائیں گے۔ ہم تمہاری سازش اور سیاست نوڈیرو میں دفن کر دینگے ۔ پاکستان کی فوج ہماری فوج ہے اور ہمیں جرنیلوں اور سپاہیوں سے محبت ہے لیکن ان جرنیلوں سے نہیں جنہوں نے آمریت اور چار بار مارشل لاءنافذ کیا اور ملک کو دو لخت کیا۔ فوج کے ساتھ اختلافات پیدا کرنے کی آصف زرداری کی ناپاک سازش کبھی کامیاب نہیں ہوگی۔ وہ نارووال کی تحصیل ظفروال کے قصبہ درمان میں آزاد کشمیر اسمبلی کے انتخابات کے حوالے سے مسلم لیگ (ن)کے امیدوار حاجی محمد ارشد کی انتخابی مہم کے موقع پر بڑے جلسہ عام سے خطاب کررہے تھے۔ رکن قومی اسمبلی احسن اقبال، ارکان صوبائی اسمبلی اویس قاسم خان ، کرنل (ر) شجاعت احمد خان ، خواجہ احمد حسان اور مسلم لیگی رہنما بھی اس موقع پر موجود تھے۔ وزیراعلی محمد شہبازشریف نے کہاکہ قوم آج آصف زرداری سے یہ جواب مانگتی ہے کہ وہ پاکستان کے ساتھ ہیں یا پاکستان کے دشمنوں کے ساتھ؟ ایبٹ آباد سانحہ کے بعد جب پوری قوم غم سے نڈھال تھی تو زرداری اغیار کو مبارک باد دے رہے تھے اس سے بڑا قوم سے مذاق ہو نہیں سکتا۔ میں میڈیا کو سلام پیش کرتا ہوں جس نے زرداری کی لوٹ کھسوٹ ، کرپشن ، سوئس بنکوں میں عوام کے خون پسینے کی کمائی اور دوسری کرپشن کو اجاگرکیا۔ آج زرداری فوج کے ہمدرد بنے بیٹھے ہیں مگر ہم ان کے مذموم عزائم کامیاب نہیں ہونے دیں گے ۔ ہم نے کبھی فوج پر تنقید نہیں کی سوائے ان جرنیلوں کے جنہو ںنے ملک میں مارشل لاءلگایا اور این آر او کے ذریعے زرداری کا راستہ صاف کیا۔ سندھ، بلوچستان اور خیبر پی کے کو زرداری اور اس کے حواریوں سے بچائیںگے۔ پاکستان کو صحیح معنوں میں قائد اعظم کا ملک بنائیں گے۔ 26 جون کو انتخابات میں بھر پور کامیابی سے ہمکنا ر ہوں گے اور زرداری کی سیاست کو نوڈیرو میں دفن کردیں گے۔ بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح نے کشمیر کو پاکستان کی شہ رگ قرار دیاتھا جب 1999 میں ہندوستان کے وزیراعظم واجپائی لاہور آئے تو انہوں نے مینار پاکستان جاکر کہا تھا کہ 1947ءمیں پاکستان بنتے وقت ہمارے دلوں پر گہرے گھاو لگے تھے لیکن آج مینا رپاکستان کے سائے تلے ہم پاکستان کو دل کی گہرائیوں سے تسلیم کرتے ہیں اور یہ تمام کمال محمدنوازشریف کی قیادت اور ایٹمی دھماکوں کی برکت سے ہوا۔ واجپائی نے اعلان لاہور پر دستخط کئے جس میں کشمیر سمیت تمام مسائل کو بات چیت سے حل کرنے کا فیصلہ کیاگیا تھا اور بھارتی وزیراعظم نے کہاکہ ایک سال کے عرصے میں کشمیر کے مسئلے کا منصفانہ حل تلاش کرنا چاہتا ہوں تاکہ میری زندگی میں انصاف کے تقاضوں کے مطابق مسئلہ کشمیر حل ہوسکے۔ لیکن مشرف نے 1999میں جمہوری حکومت پر شب خون مارا اور اعلان لاہور پر کڑی تنقید کی لیکن کھٹمنڈو میں واجپائی سے ہاتھ ملانے کے لئے سربسجود ہوگیا۔ اس سے بڑی کشمیریوں سے اور کوئی زیادتی نہیںہو سکتی۔ وقت آگیاہے کہ ہمیں یہ فیصلہ کرنا ہے نواز شریف کو بطور وزیراعظم منتخب کرنا ہے تاکہ کشمیریوں کا حق دلوایا جا سکے۔ انہوں نے علاقے کی ترقی کے لئے اہم اعلانات کرتے ہوئے کہا کہ مالکانہ حقوق کی فیس کم کرکے 500 روپے اور اس کی ادائیگی میں ایک سال کی توسیع کا اعلان کرتا ہوں۔ قبل ازیں احسن اقبال نے کہا کہ گزشتہ ساڑھے 3 سال میں نارووال کی ترقی کے لئے جو اقدامات کئے گئے ان کی مثال نہیں ملتی۔ اس موقع پر امیدوار ایم ایل اے حاجی محمد رشید‘ خواجہ وسیم بٹ‘ ڈاکٹر نعمت علی جاوید، چودھری اصغر علی ‘ چودھری اویس قاسم ایم پی اے‘ ضلعی صدر مسلم لیگ (ن) ملک طارق محمود اعوان‘ کرنل (ر) شجاعت احمد تاج‘ سابق ایم این اے چودھری اشفاق تاج‘ سابق ناظم رانا وکیل خان منج‘ سعید الحق ملک اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ سابق ایم ایل اے مولوی یعقوب مرلی نے مسلم لیگ (ن) میں شمولیت کا بھی اعلان کیا۔ دریں اثنا پنجاب اسمبلی سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلی پنجاب نے کہا کہ پنجاب حکومت نے اغیار کی ایسی امداد ترک کرنے کا تاریخی فیصلہ کیا ہے جو ملک کے بے گناہ لوگوں کے خون میں بھیگی ہو اور جس سے ملک کی عزت خاک میں ملائی جا رہی ہو۔ وزیراعلی نے سپیکر سے درخواست کی کہ اغیار کی بھیک پر بحث کے لئے پورا دن مقرر کیا جائے‘ یقین کامل اور امید واثق ہے کہ پورا ایوان یک زبان ہو کر ایسی امداد کو پایہ حقارت سے ٹھکرا دے گا جس سے بے گناہ پاکستانیوں کا خون بہایا جا رہا ہو اور ہماری آزادی و خودمختاری پر آنچ آتی ہو۔ فیصل آباد سے رکن صوبائی اسمبلی رانا محمد افضل خان کی اہلیہ ڈاکٹر نجمہ افضل خان نے وزیراعلی پنجاب محمد شہباز شریف سے ملاقات کی اور انہیں سیلاب متاثرین کے ماڈل دیہات کی تعمیر کے لئے 7 لاکھ روپے کا چیک پیش کیا۔
اسلام آباد (نمائندہ خصوصی) قائد حزب اختلاف چودھری نثار علی خان نے کہا ہے کہ پاکستان فوج کو آصف زرداری کی صورت میں نیا ترجمان اور محافظ مبارک ہو۔ جس فوج کو آصف زرداری کی دوستی اور معاونت میسر ہے انہیں دشمن کی یکسر ضرورت نہیں یہ قوم گونگی اور بہری نہیں کہ وہ آصف زرداری کی فوج کے خلاف گزشتہ سال کی گئی مسلسل ہرزہ سرائی بھول گئی ہو۔ ایوان صدر کے درودیوار اس لب و لہجے اور بدترین زبان کے گواہ ہیں جو آصف علی زرداری نے فوج اور جرنیلوں کے خلاف مسلسل ڈیڑھ سال استعمال کی۔ آج اگر ذاتی مفادات اور اپنی کرسی کا تحفظ کرنے کے لئے وہ سابقہ ارشادات اور تقاریر بھول گئے ہیں تو میں یقین دلاتا ہوں کہ قوم وہ سب کچھ نہیں بھولی۔ پارلیمنٹ ہاﺅس میں اپوزیشن لیڈر کے چیمبر سے جاری بیان میں انہوں نے کہا کہ فوج کے لئے یہ بات باعث تضحیک ہے کہ جو شخصیت آئینی طور پر پاکستان کی فوج کے سپریم کمانڈر کے طور پر براجمان ہے انہوں نے اپنے دور صدارت کے دوران افواج کے بارے میں بدترین‘ غیر مہذب‘ غیر شائستہ اور نازیبا زبان استعمال کی جس کی پاکستانی سیاسی تاریخ میں کوئی مثال نہیں ملتی۔ فوجی افسر کی گرفتاری کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ مجھے اس کیس کے پس منظر کا تو علم نہیں‘ مگر مجھے اس گھٹن کے ماحول پر شدید تشویش ہے جس میں ہر باعمل اور بااصول مسلمان کو شک کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے فوج کی بنیاد ایمان کے ساتھ وابستگی اور اسلامی عقائد سے پیوست ہے۔ عوام اپنی فوج کو پاکستان کے ساتھ ساتھ اسلام کا محافظ بھی سمجھتے ہیں فوج کی واضح اکثریت اسی منشور اور ایجنڈے پر عمل پیرا ہے ہمیں ایسا کوئی اقدام نہیں کرنا چاہئے جس میں فوج کے اندر ہم سیکولر اور اسلام پسند کی تفریق ڈالنے کی کوشش کریں۔ یہ فوج کے لئے نہیں اس ملک کے لئے بھی تباہ کن ہو گا۔ صدر آصف علی زرداری میاں صاحب کو مولوی کہہ کر ہمارے اسلامی عقائد پر جو طنز کر رہے ہیں اور جس انداز سے اپنی اخلاقی اور مذہبی بے راہ روی کا اظہار کر رہے ہیں اس کے پیچھے عزائم کسی سے پوشیدہ نہیں‘ ہمیں فخر ہے کہ ہماری سیاست اسلام پسندی کی سیاست ہے آج ملکی مسائل اور مشکلات کی حقیقی وجہ یہی ہے کہ ہم اسلام کے اصل راستے سے بھٹک چکے ہیں اور ملک کی اس سے اور بڑی بدقسمتی کیا ہوگی کہ حکمرانی کی باگ ڈور ایسے لوگوں کے ہاتھوں میں ہے جو اپنے ایمان اور مذہب پر طنز اور تضحیک کرتے ہوئے ذرا نہیں کتراتے۔ زرداری جتنے بیانات اور تقاریر کر لیں وہ ملک کے طول و عرض میں منفی سیاست و حکمرانی کی علامت بن چکے ہیں۔ ان کا دور ملک کے لئے عذاب سے کم نہیں۔ حکمرانوں کو عوام کے جذبات اور کیفیت کا اندازہ اس دن ہو گا جس دن الیکشن کا اعلان ہو گا۔ زرداری اور ان کے حواریوں نے پاکستان کو تو تباہی کے دہانے پہ کھڑا کر ہی دیا مگر اس کے ساتھ ساتھ انہوں نے پیپلز پارٹی کو بھی اتنا نقصان پہنچایا جتنا پیپلز پارٹی کے مخالفین بھی نہیں پہنچا سکے۔ عوام کے ووٹوں کے ذریعے منتخب ہونے کے باوجود زرداری مشرف کی انداز حکرانی سے باہر نہیں آ سکے۔ حالات بتاتے ہیں کہ ان کا انجام بھی مشرف کے انجام سے مختلف نہیں ہو گا۔ آئندہ الیکشن مسلم لیگ (ن) ایک نکاتی ایجنڈا پر لڑے گی اور وہ یہ ہو گا کہ زرداری برانڈ کی حکمرانی‘ کرپشن‘ منافقت اور بداعمالیوں سے پاکستان کو ہمیشہ کے لئے پاک کیا جائے۔ پاکستان کا کوئی بے خبر ہی ووٹر ہو گا جو زرداری کے سوراخ سے دوبارہ ڈسا جائے۔

نفس کا امتحان

جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف خواتین کی مہم ’می ٹو‘ کا آغاز اکتوبر دو ...