وزیراعلیٰ پنجاب کے نام

23 جون 2011
مکرمی! اِن دنوں آپ صُوبہ بھر میں نئے واٹر فلٹریشن پلانٹ نصب کرنے اور خراب پڑے واٹر فلٹریشن پلانٹس کی فوری مرمت پر زور دے رہے ہیں۔ میاں صاحب صُوبہ بھر کی تقریباً بیس 20 فیصد آبادی اپنے گھروں کے ریفریجریٹرز میں سے ٹھنڈا پانی اور برف حاصل کرتے ہیں لیکن اسی 80 فیصد آبادی آج بھی دیہات اور شہروں میں آئس فیکٹریز کی برف استعمال کرتی ہے آئس فیکٹریز میں جو پانی استعمال ہوتا ہے وہ صاف و شفاف نہیں ہوتا برف جمانے کےلئے پانی کے جو ٹینک استعمال ہوتے ہیں اُنہیں بھی زنگ نے کھایا ہوتا ہے۔ میری آپ سے گذارش ہے کہ صُوبہ بھر کے کمشنرز صاحبان کو احکامات صادر کریں کہ اُن کے علاقے میں جہاں جہاں آئس فیکٹریز ہیں اُنہیں اپنا اپنا فلٹریشن پلانٹ نصب کرنے اور زنگ آلود ٹینک تبدیل کرنے کےلئے محدود مُدت کی ڈیڈ لائن دیں۔
(رانا ریاض احمد .... ساہیوال 0321-6907357)