خواجہ پرویز کی وفات پر

23 جون 2011
اتنا بھی سوچا نہ کیا مجھ پہ گزر جائے گی
جب تیری موت کی بابا یہ خبر آئے گی
میں نے سوچا بھی نہ تھا شہنشاہ شعر و سخن
بعد تیرے کبھی ایسی بھی سحر آئے گی
کس طرح بھولے گی شفقت وہ تیری دل سے مرے
تیری بیٹی یہ بتا کیسے صبر پائے گی
کس طرح روکے گی بہتے ہوئے اشک بتا
جب تیری بیٹی تجھے بابا نہ گھر پائے گی
روئے گی شام و سحر اے میرے جالب ثانی
زندگی یونہی میری رو رو کے گزر جائے گی
محمد میں تجھ کو ملے سایہ پنجتن خواجہ
دعا رخشندہ کی لاریب اثر لائے گی
(رخشندہ حبیب جالب)

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...