پمز ہسپتال کی ابتدائی میڈیکل رپورٹ کی روشنی میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کو جیل میں ہی طبی امداد دینے کا فیصلہ

Jul 23, 2018 | 22:32

ویب ڈیسک

پمزہسپتال کے چار رکنی میڈیکل بورڈ نے اڈیالہ جیل کے ہسپتال میں نواز شریف کا طبی معائنہ کیا . میڈیکل بورڈ میں کارڈیالوجیسٹ ڈاکٹرنعیم ملک ، میڈیکل سپیشلسٹ ڈاکٹر شجیع، ڈاکٹر سہیل تنویراور گیسٹرولوجسٹ ڈاکٹرمشہود شامل تھے. چاررکنی ٹیم سابق وزیراعظم نوازشریف کے طبی معائنے کے لیے جدید موبائل لیبارٹری کے ہمراہ اڈیالہ جیل پہنچی . میڈیکل بورڈ نے تین گھنٹے تک نواز شریف کے مختلف ٹیسٹ کیے جن میں ای سی جی، آر ایف ٹی اور دیگر ٹیسٹ شامل ہیں . ٹیسٹوں کے بعد ابتدائی طبی معائنے کی رپورٹ تیار کی گئی جس کی روشنی میں نواز شریف کو جیل سے باہر کسی ہسپتال منتقل نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا. نوازشریف کے ٹیسٹوں کی مکمل رپورٹس آنے پرعلاج کے حوالے سے حتمی فیصلہ کیا جائے گا. اڈیالہ جیل میں اتوار کی شب سابق وزیر اعظم نواز شریف کی طبیعت ناساز ہوگئی تھی جس کے بعد آر آئی سی کے ہیڈ نے طبی معائنے کے بعد انہیں علاج کے لئے ہسپتال منتقل کرنے کی ہدایت کی تھی ۔

مزیدخبریں