دہشت گردی اور وی آئی پی کلچر

23 جولائی 2009
مکرمی! پاکستان کی سکیورٹی فورسز بمعہ پولیس انتہائی ذمہ دار اور فعال ہیں ان کے کام میں سب سے بڑی رکاوٹ وی آئی پی کلچر ہے۔ اس کلچر نے سکیورٹی اداروں کے اہلکاروں کے ذہنوں پر ایک انجانا خوف اور رعب مسلط کیا ہوا ہے کہ کسی چیک پوسٹ یا ناکے پر سبز نمبر پلیٹ والی یا ایم این اے‘ ایم پی اے والی گاڑی کو روکتے ہوئے اہلکار گھبراتے ہیں یہ ضروری نہیں ہے کہ سبز نمبر پلیٹ والی یا پھر جھنڈے والی یا ایم این اے والی گاڑی میں وہی صاحب بیٹھے ہوں بیٹھے بھی ہوں تو یہ وی آئی پیز کوئی فرشتے نہیں ہیں باسٹھ برسوں میں قائد کے نظریاتی پاکستان کا انہوں نے کیا حشر کر رہا ہے۔ پاکستان اس وقت جہاں کھڑا ہے سب انہیں وی آئی پیز کا کیا دھرا ہے۔ دہشت گردی کی روک تھام کے لئے سکیورٹی اداروں کو با اختیار اور پاور فل بنانا ہو گا اور یہ ادارے ان تمام وی آئی پیز سے سپریم ہوں ہر ناکے اور اہم تنصیبات کی چیک پوسٹوں پر عام گاڑیوں کے ساتھ ساتھ مذکورہ بالا گاڑیوں اور ان میں بیٹھے صاحبان کو زیادہ تسلی بخش طریقے سے چیک کیا جائے اور یہ یقین کیا جائے کہ یہ گاڑی اور اس میں موجود افراد بالکل صاف ہیں۔
(محمد اقبال کوٹ لکھپت لاہور فون نمبر 03454287618 )