گرفتار ہونیوالے شدت پسندوں سے امریکی اسلحہ بھی ملا: رحمن ملک

23 جولائی 2009
اسلام آباد (ثناء نیوز + اے پی پی) وزیر داخلہ رحمان ملک نے کہا ہے کہ سوات مالاکنڈ میں آپریشن کے دوران پکڑے گئے شدت پسندوں کے قبضے سے ملنے والا زیادہ تر اسلحہ امریکی اور روسی ساخت کا ہے۔ سوات مالا کنڈ میں آپریشن کے دوران حراست میں لئے گئے 500 سے زائد دہشت گردوں میں سے 90 فیصد غیر ملکی ہیں براہمداغ بگٹی پاکستان اور اسلام دشمن سرگرمیوں میں ملوث ہے اس کی حوالگی کے لئے افغان حکومت کو 3 خطوط لکھے ہیں اس سلسلے میں قوم جلد خوشخبری سنے گی۔ انٹرویو کی مزید تفصیلات کے مطابق رحمان ملک نے کہا کہ دہشت گردوں سے ملنے والے امریکی ساخت کے اسلحہ کے بارے میں امریکہ سے وضاحت طلب کرنے پر بتایا گیا ہے کہ ان کا اسلحہ چوری ہوا تھا۔ ہم نے نیٹو اور افغانستان حکومت کو کہہ دیا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف ہم نے بہت کچھ کیا ہے اور کر رہے ہیں اب آپ بھی ایسا ہی کریں۔ ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ براہمداغ بگٹی کے ساتھ ہمارا کوئی رابطہ نہیں ہے ہم اسے پیغام دیتے ہیں کہ آئو تم ہمارے بچے ہو آپ کے والدین سے ہماری دوستی ہے، واپس آ کر اسلام آباد کوئٹہ میں رہو، ہم آپ کا دفاع کریں گے لیکن آزادی کی باتیں چھوڑ دو، ہم اسے عام معافی دے دیں گے۔ دریں اثناء وزیر داخلہ نے اپنے دورہ فرانس کے دوران گزشتہ روز بھی مصروف دن گزارا اور فرانس کے دہشت گردی کے خاتمہ کیلئے قائم سپیشل گروپ آف نیشنل جینڈر میری اور پولیس ہیڈ کوارٹرز کا دورہ کیا۔ وزیرداخلہ فرانس کے سپیشل گروپ آف نیشنل جینڈر میری کے ہیڈ کوارٹرز کے دورہ پر پہنچے تو ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا۔ وزیر داخلہ نے کہا کہ اگر فرانس پاکستانی خفیہ ایجنسی کے ملوث ہونے کے حوالے سے ثبوت فراہم کرے تو پاکستان فرانسیسی انجینئروں کی ہلاکتوں کے حوالے سے نئی تحقیقات کرانے کو تیار ہے۔