ثالث کی تقرری کے بعد ویسٹ انڈیز کے سینئر کھلاڑی قومی ٹیم میں کھیلنے کیلئے رضا مند

23 جولائی 2009
بارباڈوس (پی پی آئی) ویسٹ انڈیز کے سینئر کھلاڑی دولت مشترکہ کے سابق سیکرٹری جنرل کی جانب سے ثالث مقرر ہونے کے بعد قومی ٹیم میں واپس آنے کے لئے تیار ہو گئے ہیں۔ دولت مشترکہ کے سابق سیکرٹری جنرل شری داتھ رام پال نے ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ اور کھلاڑیوں کے درمیان ثالث کا کردار ادا کیا اور دونوں فریقین کو معاملہ حل کرنے پر رضامند کر لیا جس کے بعد بائیکاٹ کرنے والے کرکٹرز نے بنگلہ دیش کے خلاف ون ڈے سیریز میں اپنی دستیابی پر آمادگی ظاہر کر دی ہے۔ کرکٹرز کی تنظیم اور بورڈ کے درمیان معاملہ حل کرنے کے لئے گیا نا کے صدر بھارات جگدیو نے بھی اہم کردار ادا کیا۔ بھارات جگدیو نے کھلاڑیوں کی جانب سے ثالث کی تقرری کے بعد ٹیم میں واپس آنے پر رضامندی ظاہر کرنے کا اعلان کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ دونوں فریقین کو مسئلہ کے باعث کھیل کو پہنچنے والے نقصان کا اندازہو گیا تھا جس پر بورڈ اور کھلاڑی معاملہ حل کرنے پر رضامند ہوئے ہیں۔ کپتان کرس گیل سمیت 13سینئر کھلاڑیوں نے بورڈ کے ساتھ کنٹریکٹس، میڈیکل الائونس اور سفری اخراجات کے معاملہ پر کھیل سے بائیکاٹ کرنے کے بعد بنگلہ دیش کے خلاف ٹیسٹ سیریز میں حصہ نہیں لیا تھا۔ بنگلہ دیش اور ویسٹ انڈیز کے درمیان ون ڈے سیریز کا آغاز 26 جولائی کو ہو رہا ہے جس کے لئے ویسٹ انڈیز کرکٹ بورڈ 14رکنی سکواڈ کا اعلان کر چکا ہے جس میں بائیکاٹ کرنے والے کھلاڑی شامل نہیں ہیں۔ سینئر کھلاڑیوں کے بائیکاٹ ختم کرنے کے بعد سکواڈ میں تبدیلی کا امکان ہے۔