20 لاکھ سے زائد غیر ملکیوں کو شہریت دی گئی‘ نادرا سپیشل برانچ ملوث ہے : قائمہ کمیٹی خزانہ

23 جنوری 2015

اسلام آباد (نوائے وقت نیوز + آن لائن) سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے خزانہ کی ذیلی کمیٹی کا اجلاس ہوا۔چیئرمین سینیٹر طلحہ محمود نے کہا کہ 20 لاکھ سے زائد غیر ملکی افراد پاکستانی شہریت حاصل کر چکے ہیں، سکیورٹی کلیئرنس دینے میں نادرا حکام اور سپیشل برانچ کے لوگ ملوث ہیں۔ سنتری بادشاہ بھی پیسے لے کر سرٹیفکیٹ جاری کر دیتے ہیں۔ لاکھوں افغان کلیئرنس سرٹیفکیٹ حاصل کر کے پاکستانی شہری بن چکے ہیں۔ آن لائن کے مطابق سینٹ کی سب کمیٹی برائے خزانہ نے نج کاری کے عمل کو شفاف بنانے کے لئے نج کاری کے قوانین میں بعض ترامیم کی منظوری دیدی قومی اثاثوں کو مالکانہ حقوق پر نہ دینے، نج کاری میں حصہ لینے والے حکومتی اہلکار، ان کی جانب سے ذاتی مفادات نہ ہونے، نیشنل سکیورٹی کا قانون بنانے، نج کاری سے حاصل ہونے والی آمدنی کو قرضوں کی ادائیگی میں استعمال کرنے، پوسٹ آڈٹ اور نج کاری کے لئے پیش کئے جانےوالے اداروں کے ساتھ موجودہ قیمتی اراضی فروخت نہ کرنے پر طویل بحث کے بعد معاملات پر نج کاری کمشن اور سب کمیٹی کے مابین اگلے ہفتے میں مزید بحث پر اتفاق کر لیا گیا۔ نجکاری کمشن کے چیئرمین محمد زبیر نے کہا ماضی میں نجکاری کے عمل میں خامیوں کی وجہ سے پاکستان کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ سینیٹر محمد طلحہ محمود نے کہا بدقسمتی سے پاکستان میں ایسی مثالیں موجود ہیں جب قومی اثاثوں کو کوڑیوں کے مول بیچ دیا گیا۔ ہمیں ایسا طریقہ کار وضع کرنے کی ضرورت ہے کہ تمام عمل شفاف طریقے سے مکمل ہو اور قوم کی امانت میں خیانت نہ ہوسکے۔
قائمہ کمیٹی خزانہ