ریاستوں اور سرحدی امور کے وزیر عبدالقادر بلوچ نے کہا ہے کہ افغانستان تسلی رکھے، مہاجرین کو ملک بدر نہیں کیاجائے گا، افغان مہاجرین کو پاکستان لانے میں ہمارا کوئی قصور

23 دسمبر 2014 (15:28)
ریاستوں اور سرحدی امور کے وزیر عبدالقادر بلوچ نے کہا ہے کہ افغانستان تسلی رکھے، مہاجرین کو ملک بدر نہیں کیاجائے گا، افغان مہاجرین کو پاکستان لانے میں ہمارا کوئی قصور

اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے عبدالقادر بلوچ کا کہنا تھا کہ اس وقت ملک میں تیس لاکھ افغان مہاجرین موجود ہیں، جن میں سے سولہ لاکھ رجسٹرڈ ہیں مہاجرین کیلئے ملک میں پنتالیس مقامات مختص کئے ہیں، ہم نے پینتیس سال سے افغان مہاجرین کو برداشت کیا، اور مہمان نوازی کا حق ادا کیاامریکا اور دیگر ممالک نے روس کو شکست دینے کی خاطر افغانستان پر جنگ مسلط کی جس کا خمیازہ مہاجرین کی صورت میں پاکستان بھگت رہا ہےعبدالقادر بلوچ کا کہنا تھا کہ سانحہ پشاور کے بعد افغان مہاجرین کے بارے میں غلط فہمیاں پیدا ہوئیں، رجسٹرڈ مہاجرین کبھی بھی دہشت گردی میں ملوث نہیں پائے گئے، ان کا کہنا تھا کہ یونیسیف کی مدد سے مہاجرین کو واپس بجھوایا جائے گا، عالمی اداروں نے امداد کا وعدہ پورا نہیں کیا یہ تاثر غلط ہے کہ ہم افغان مہاجرین کو زبردستی نکال رہے ہیں ، افغان حکومت تسلی رکھے،، مہاجرین کو ملک بدر نہیں کریں گے،