ایس جی ایس‘ کو ٹیکنا ریفرنسز میں زرداری کی بریت کی درخواست مسترد‘ 8 جنوری تک شہادتیں طلب

23 دسمبر 2014

اسلام آباد (نامہ نگار) احتساب عدالت نے دو کرپشن ریفرنسز میں سابق صدر آصف علی زرداری کی بریت کی درخواست مسترد کرتے ہوئے  آئندہ سماعت پر نیب سے مزید شہادتیں طلب کر لی ہیں، گزشتہ روز احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے سابق صدر آصف علی زرداری کیخلاف ایس جی ایس اور کوٹیکنا ریفرنسز کی سماعت کی، سابق صدر کے کونسل فاروق ایچ نائیک نے بریت کی درخواستوں پر دلائل دیتے ہوئے موقف اپنایا کہ میرے موکل کیخلاف بنائے گئے دونوں مقدمات سیاسی نوعیت کے ہیں جن میں پیش کردہ شواہد ناکافی ہیں، نیب پراسیکیوٹر چودھری ریاض نے بریت کی درخواست کی مخالفت کرتے ہوئے عدالت کو بتایا کہ سابق صدر نے سوئس کمپنی کو ٹھیکہ دلوانے کے عوض چھ فیصد رشوت وصول کی جس کے شواہد عدالت میں جمع کروا دیئے، فاضل عدالت نے دلائل سننے کے بعد سابق صدر آصف زرداری کی بریت کی درخواست مستر کرتے ہوئے سابق صدر کیخلاف ٹرائل جاری  رکھنے کی ہدایت کر دی جبکہ نیب کو حکم جاری کیا کہ آٹھ جنوری تک مزید شہادتیں پیش کی جائیں۔ این این آئی کے مطابق سماعت کے دوران عدالت کا کہنا تھا کہ ان ریفرنسز میں بعض ایسے شواہد موجود ہیں جن کی بناء پر بریت کا فیصلہ جاری نہیں کیا جاسکتا۔ سابق صدر زرداری کے خلاف کرپشن کے یہ ریفرنس 1998ء میں قائم کئے گئے تھے اور ان کے عہدہ صدارت سے ہٹنے کے بعد ان ریفرنسز کی سماعت دوبارہ شروع کردی گئی تھی۔