معاشرے میں بڑھتا ہوا نشہ

23 دسمبر 2014
معاشرے میں بڑھتا ہوا نشہ

مکرمی! آج پاکستان میں نشے کی خرید و فروخت عام سی بات ہو گئی ہے ایسے لوگ سڑکوں پر دن رات پڑے نظر آتے ہیں جن کو روٹی تو ملتی نہیں مگر نشہ سڑک پر پڑے پڑے مل جاتا ہے۔ نشہ نوجوانوں کی رگوں میں زہر گھول رہا ہے۔ نشہ کرنے والے خود کو تو تباہ کر ہی رہے ہیں ساتھ ساتھ اپنی نسلوں کو بھی تباہ کر دیتے ہیں۔ آخر کب تک نوجوان اس لعنت سے مرتے رہیں گے اور کتنے گھرانے اجڑتے رہیں گے؟ ہمارے ملک میں قانون نافذ کرنے والوں سے گزارش ہے کہ خدارا اپنے ملک کے نوجوانوں کو نشے کی لعنت سے بچائیں اور ان کے لئے کچھ ایسا کریں کہ منشیات کے عادی افراد نشے کی عادت ترک کر کے ملک کے مہذب شہری بن جائیں اور ملک کی تعمیر و ترقی میں اپنا کردار ادا کریں۔ (حافظہ ظل ہما ایم اے او کالج لاہور)