پیرسید نور الحسن شاہ بخاریؒ

22 نومبر 2009
مکرمی! یہ ایک حقیقت ہے کہ برصغیر پاک و ہند میں اسلام کا نور ان صوفیائے کرام کی تبلیغی جدوجہد کا ثمر ہے۔ جن کا فرمایا ہوا زمانے میں مستند ٹھہرا۔ ان کا پیغام دکھی دلوں کیلئے امن و راحت کا پیغام بن گیا اور پیر سید نورالحسن شاہ بخاریؒ کا شمار بھی اللہ کی ان برگزیدہ ہستیوں میں ہوتا ہے جنہوں نے اپنے علم و فضل کی تاثیر سے بے شمار گمراہوں کو راہ حق پر گامزن کر دیا۔ آپؒ کی ولادت باسعادت بروز بدھ 30 جنوری 1889ءکو ہوئی۔
کشف و کرامات بزرگان دین کی زندگی کا حصہ ہوتا ہے لہٰذا آپؒ سے ہزاروں کرامات منسوب ہیں۔ کتاب انشراح الصدور بتذکرة النور ایک ضخیم جلد ہے آپ کے ارشادات اور کرامات سے بھری پڑی ہے جس سے آپ کی روحانی قدر و منزلت اور ایمانی جلالت کا بخوبی اندازہ ہوتا ہے مگر آپ کی سب سے بڑی کرامت یہ تھی کہ آپ نے اعلیٰ حضرت شیر ربانیؒ کا مشن زندہ رکھا۔
حضرت قبلہ سید نور الحسن شاہ بخاریؒ کا وصال مبارک 21 نومبر 1952ءکو ہوا۔ آپ نے اپنے شیخ کامل کی ظاہری اور باطنی اتباع میں فنا فی الشیخ کا حقیقی نمونہ عوام و خاص کے سامنے اس شان سے پیش کیا کہ آپ کے شیخ کامل کی تاریخ وصال عمر اور آپ کے وصال میں معمولی فرق بھی رونما نہ ہوا۔
حضرت پیر سید نور الحسن شاہ بخاریؒ کا سالانہ عرس مبارک 22\\\\ 23 نومبر اتوار پیر دربار عالیہ حضرت کیلیانوالہ شریف میں ضلع گوجرانوالہ حضور خوشبوئے مدینہ مقبول بارگاہ رسول حضرت پیر سید محمد باقر علی شاہ بخاری قدس سرہ کی زیر نگرانی ہر سال منعقد ہوتا ہے۔ لعل دین انصاری نقشبندی مجددی ایم اے بی ایڈ