۔ا مریکہ نے افغانستان میں طالبان کے خلاف لڑنے کیلئے مخالف مسلح گروپوں کی مدد شروع کردی

22 نومبر 2009 (15:22)
نیویارک (نمائندہ خصوصی) امریکہ نے افغانستان کے مختلف حصوں میں طالبان کے خلاف لڑنے کیلئے مخالف مسلح گروپوں کی مدد کرنا شروع کردی ہے۔ امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کی رپورٹ کے مطابق امریکہ کی جانب سے طالبان مخالف مسلح گروپوں کی مدد کا مقصد طالبان کے خلاف بغاوت کرانا ہے۔ امریکی اور افغان حکام جنوبی اور مشرقی افغانستان میں طالبان کے مضبوط گڑھ شمار کئے جانے والے علاقوں میں ایسے گروپس کی مدد کی منصوبہ بندی میں مصروف ہیں۔ اس پروگرام کو \\\" کمیونٹی ڈیفنس\\\" کا نام دیا گیا ہے۔ اخبار کے مطابق اس کا مطلب لوگوں میں اپنی مدد آپ کے تحت طالبان کے خلاف لڑنے کی صلاحیت پیدا کرنا ہے۔ اس پروگرام سے طالبان کے خلاف لڑنے والے امریکی اور افغان سکیورٹی حکام پر بوجھ میں کمی ہوگی جبکہ افغان فورسز کی تربیت اور ان میں اضافے کا جو خلاءہے اسے بھی پورا کرنے میں مدد ملے گی۔ اخبار کے مطابق ایک سینئر امریکی اہلکار نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ اس اقدام کا مقصد افغان عوام میں اپنی سکیورٹی خود سنبھالنے کیلئے ذمہ داری کا احساس پیدا کرنا ہے اور کئی علاقوں میں اس پر عملدرآمد شروع ہو چکا ہے۔ تاہم اخبار کا کہنا ہے کہ طالبان مخالف قائم کئے جانے والے گروپوں کے آپس میں اختلافات یا ان کے افغان اور امریکی حکومتوں کےخلاف ہونے کے خدشات بھی موجود ہیں۔ امریکی حکام کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ ان گروپوں کو کم اور محدود پیمانے پر رکھنے کی کوشش کی جائیگی۔ انہیں براہ راست افغان حکومت کے کنٹرول میں دیا جائیگا تاکہ ماضی کی غلطیوں کو نہ دہرایا جاسکے۔