مقبوضہ بیت المقدس میں مزید مکانات کی تعمیر کے فیصلے پر عملدآمد فوری روکا جائے: او آئی سی

22 نومبر 2009 (15:15)
کوےت سٹی (نمائندہ خصوصی) مسلمانوں کی نمائندہ عالمی تنظیم اسلامی کانفرنس کے جنرل سیکرٹری اکمل الدین احسان اوگلو اسرائیل کی جانب سے بیت المقدس میں مزید 900 مکانات کی تعمیر کے اعلان کی شدید مذمت کرتے ہوئے فیصلے پر عمل درآمد فوری طور پر روکنے کا مطالبہ کیا ہے۔مڈل ایسٹ اسٹڈی سینٹر کی رپورٹ کے مطابق جدہ میں ایک عرب خبر رساں ادارے \\\"قدس پریس\\\" سے ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ اسرائیل بیت المقدس میں یہودیوں کی عددی برتری ثابت کرکے شہر کو مسلمانوں اور عرب ممالک سے چھیننا چاہتا ہے۔ تل ابیب کی اس سازشوں کا مقصد شہر کی اسلامی اور عربی شناخت ختم کرکے اسے مکمل طو رپر یہودیوں کی وراثت ثابت کرنا ہے۔اکمل الدین احسان اوگلو کا کہنا تھا کہ جب تک تمام مسلمان ممالک مل کراسرائیلی سازشوں کے لیے کوئی لائحہ عمل تیار نہیںکرتے ان سازشوں کو نہیں روکا جا سکتا۔ انہوں نے اسرائیل کے ہاتھوں بیت المقدس میں مقدسات اسلامی پر کیے جانے والے حملوں کو القدس کے حوالے سے تباہ کن قراردیتے ہوئے عالمی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ اسرائیل پر بیت المقدس میں یہودی آباد کاری روکنے کے لیے دبا ڈالے اور فلسطینی عوام کے حقوق سے متعلق اپنی ذمہ داریاں پوری کرے۔