این آر او زدہ وزرا نے 28 نومبر تک اپنا فیصلہ نہ کیا تو وزیراعظم کرینگے: منظور وٹو

22 نومبر 2009
لاہور (خبر نگار خصوصی) وفاقی وزیر صنعت و پیداوار میاں منظور احمد وٹو نے کہا ہے کہ صدر زرداری 17ویں ترمیم کے خاتمے سمیت تمام اختیارات وزیراعظم کو دینے پر تیار ہیں‘ این آر او سے فائدہ اٹھانے والے وفاقی وزرا نے 28 نومبر تک اپنے بارے میں خود کوئی فیصلہ نہ کیا تو صدر اور وزیراعظم ان کا فیصلہ کریں گے‘ دوتہائی اکثریت سے مواخذے کے سوا صدر کی رخصتی کا کوئی راستہ نہیں۔ وہ گذشتہ روز اپنی ہنگامی پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے منظور وٹو نے کہا کہ جہاں تک این آر او سے فائدہ اٹھانے والوں کا تعلق ہے جب تک الزام ثابت نہ ہو جائے نااہلیت نہیں ہو سکتی‘ این آر او سے صدر کو کوئی خطرہ نہیں انہیں اس سلسلہ میں آئینی تحفظ حاصل ہے جبکہ دیگر لوگوں کو اگر عدالت نے طلب کیا تو وفاقی وزرا سمیت تمام لوگ عدالتوں میں پیش ہونگے اور مقدمات کا سامنا کریں گے۔ ملک میں اس وقت جمہوری حکومت کے خلاف افواہ ساز فیکٹریاں ملک کو عدم استحکام کا شکار کرنا چاہتی ہیں لیکن اس کے کیا مہلک نتائج نکلیں گے یہ کسی کو خبر نہیں۔ انہوں نے کہا میاں نوازشریف نے چند روز قبل جس طرح اپنے انٹرویو میں جمہوری حکومت کو سپورٹ کرنے کا فیصلہ کیا ہے وہ قابل تحسین ہے اور اس سے جمہوریت اور مضبوط ہو گی۔ میں واضح کرنا چاہتا ہوں کہ صدر آصف علی زرداری اور حکومت کو کوئی خطرہ نہیں دونوں اپنی آئینی مدت پوری کرینگے ‘ سازشیں کرنے والوں کو چاہئے کہ وہ آئندہ انتخابات تک انتظار کریں۔