مزید فوج افغانستان بھیجنے کیلئے فنڈز نہیں دے سکتے : سپیکر امریکی کانگریس

22 نومبر 2009
واشنگٹن (ثناءنیوز+ اے ایف پی) امریکی ایوان نمائندگان کی سپیکر نینسی پلوسی نے کہا ہے کہ افغان صدر حامد کرزئی ناقابل اعتماد اتحادی ہیں۔ کانگریس قابل اعتماد و اتحادی کے بغیر افغانستان میں فوج بڑھانے کے لئے فنڈز کی منظوری نہیں دے سکتی۔ ایک انٹرویو میں نینسی پلوسی نے کہا کہ افغانستان میں مزید فوج بھیجنے کے لئے سیاسی حمایت موجود نہیں ہے۔ ناقابل بھروسہ اتحادی کی موجودگی میں امریکی شہریوں کو افغانستان میں قیمتی جانوں اور مال کی قربانی کے لئے آمادہ نہیں کیا جا سکتا۔ اس صورت حال میں سوال یہ نہیں ہے کہ مزید فوج بھیجنے پر بات پر بات کی جائے بلکہ ضرورت ہے کہ اس بارے میں حکمت عملی اور مسائل پر بات کی جائے۔ دوسری جانب وائٹ ہاو¿س نے توقع ظاہر کی ہے کہ امریکی صدر اوباما مزید فوج افغانستان بھیجنے یا نہ بھیجنے کا فیصلہ 26 نومبر کو تھینکس گونگ ڈے کے بعد کریں گے۔ وائٹ ہاو¿س کے ترجمان رابرٹ گبز نے کہا کہ یہ بات واضح نہیں کہ صدر اوباما کسی فیصلے سے قبل وار کونسل کا اجلاس طلب کریں گے یا نہیں۔دریں اثنا ء امریکی سینیٹر جان مکین نے کہا ہے کہ اگرافغانستان میں مزید فوج بھیج دی جائے تو ایک سے ڈیڑھ سال میں شدت پسندوں کے خلاف جنگ جیتی جاسکتی ہے۔ امریکی سینیٹر جان مکین نے کینیڈا میں عالمی دفاعی کانفرنس سے خطاب میں کہا کہ افغانستان میں مزید فوج بھیجنے کے حوالے سے امریکی صدر بارک اوباما کی جانب سے تاخیر کے باعث جنگ جیتنے میں وقت لگ سکتا ہے۔انہوں نے کہا کہ وہ اس بات سے اتفاق کرتے ہیں کہ اگر افغانستان میں زیادہ وسائل کے ساتھ جلد مزید فوج بھیج دی جائے تو وہاں کے حالات بدل جائیں گے۔اس معاملے میں جتنی دیر کی جائے گی صدراوباما کی نئی افغان حکمت عملی کو نقصان پہنچے گا۔