A PHP Error was encountered

Severity: Notice

Message: Undefined index: category_data

Filename: frontend_ver3/Templating_engine.php

Line Number: 35

ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کیلئے یو این سکرٹری جنرل سے رجوع کیا جائے گا : سینٹ کمیٹی برائے داخلہ

22 نومبر 2009
اسلام آباد (اے پی پی + ثناء نیوز) سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے چیئرمین سینیٹر طلحہ محمود نے کہا ہے کہ کمیٹی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کیلئے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سمیت عالمی اداروں اور فورمز سے رجوع کرے گی اور ان کی رہائی کیلئے قرارداد بھجوائی جائے گی، ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی غیر مشروط رہائی سے امریکہ اور پاکستان کے عوام قریب آئیں گے، ڈاکٹر عافیہ کی رہائی کے بعد انہیں اغوا کرنے والوں کا بھی پتہ چلایا جائے گا، کمیٹی ضرور یہ جاننا چاہے گی کہ ڈاکٹر عافیہ کو کس نے اغوا کیا اور کیسے وہ افغانستان اور پھر امریکہ لے جائی گئیں۔ اس موقع پر اے این پی کے سینیٹر حاجی عدیل اور ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی بہن ڈاکٹر فوزیہ صدیقی بھی موجود تھیں۔ پارلیمنٹ ہائوس کے باہر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کمیٹی نے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی اور وطن واپسی کیلئے اب تک کئے جانے والے اقدامات کا جائزہ لیا ہے۔ کمیٹی نے فیصلہ کیا ہے کہ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کیلئے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سمیت انسانی حقوق کے تمام اداروں اور عالمی فورمز سے رجوع کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کمیٹی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو کراچی سے اغوا کرنے کی شدید مذمت کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کمیٹی نے ضروری سمجھا تو ڈاکٹر عافیہ صدیقی اور متعلقہ امریکی حکام سے بھی اس مسئلہ پر تبادلہ خیال کیلئے کمیٹی کے ارکان امریکہ جائیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ مشاہد حسین سیّد، محمد میاں سومرو اور معین الدین حیدر سے بھی کمیٹی اس سلسلہ میں معلومات حاصل کرے گی۔ ڈاکٹر فوزیہ صدیقی نے کہا کہ پاکستانی حکومت جس انداز میں ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی کیلئے اقدامات کر رہی ہے ہم اس پر حکومت کے مشکور ہیں۔ دریں اثناء سینٹ کمیٹی کو بتایا گیا کہ حکومت پاکستان نے امریکی جیل میں قید ڈاکٹر عافیہ صدیقی کے مقدمہ کے حوالے سے ایف آئی اے کی ٹیم کو امریکا بھجوانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس بارے میں ایف بی آئی کو خط لکھ دیا گیا ہے۔ حکومت کو بھی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو افغان حکومت کی جانب سے حراست میں لینے اور اسے امریکہ منتقل کرنے پر تحفظات ہیں۔ دریں اثناء سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کے اجلاس میں چیئرمین اور ارکان نے وزیر داخلہ سینیٹر اے رحمن ملک کی دہشت گردی کے خاتمے اور امریکہ میں زیر حراست ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی اور وطن واپسی کے لئے کوششوں کو بے حد سراہا اور اس توقع کا اظہار کیا کہ وزیر داخلہ کی موثر کاوشوں سے ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو رہائی ضرور ملے گی۔ دریں اثناء وفاقی وزیر انسانی حقوق ممتاز گیلانی نے کہا کہ امریکہ میں قید پاکستانی ڈاکٹر عافیہ صدیقی کے مقدمہ کی پیروی کے لئے وزارت انسانی حقوق کی ٹیم جلد روانہ ہو گی۔ ممتاز گیلانی نے اس بات کا اعتراف کیا کہ پاکستان میں انسانی حقوق کی خلاف ورزی کے واقعات بہت زیادہ ہیں‘ ان کا کہنا تھا کہ اس کی وجہ تعلیم و شعور کی کمی اور جاگیردارانہ نظام ہے۔