پاک فوج کی کاردگی پر کسی کو شک نہیں ہونا چاہئے‘ مکمل امن تک فورسز سوات میں رہیں گی : جنرل کیانی

22 نومبر 2009
مینگورہ (نامہ نگار + مانیٹرنگ نیوز ) چیف آف آرمی سٹاف جنرل اشفاق پرویز کیانی نے کہا ہے کہ سوات میں امن قائم ہو چکا ہے‘ مکمل امن تک فوج سوات میں رہے گی‘ پاک فوج کی کارکردگی پر کسی کو شک نہیں ہونا چاہئےفوج سرحدات کی حفاظت اور ملک کو مضبوط بنانے کی بھرپو صلاحیت رکھتی ہے‘ وہ گذشتہ روز دورہ سوات کے موقع پر ودودیہ ہال سیدو شریف میں مختلف سکولوں کے طلبہ و طالبات اور عمائدین علاقہ سے خطاب کر رہے تھے۔ آرمی چیف نے کہا کہ سوات میں دہشت گردوں کا صفایا کردیا گیا ہے، آپریشن راہ راست میں 550 جوان شہید اور 1500 زخمی ہو چکے ہیں، پاک فوج مکمل قیام امن اور زندگی بحال ہونے تک سوات میں موجود رہے گی۔ کور کمانڈر پشاور لیفٹیننٹ جنرل مسعود اسلم، آپریشن راہ راست کے کمانڈر میجر جنرل اشفاق ندیم، کمشنر مالاکنڈ ڈویژن فضل کریم خٹک، ڈی آئی جی مالاکنڈ ریجن محمد ادریس کے علاوہ دیگر فوجی اور سول حکام بھی تقریب میں موجود تھے۔ جنرل کیانی نے کہاکہ سوات کے عوام نے بڑی مشکل زندگی گذاری ہے ان کے مکانات تباہ اور قیمتی جانیں ضائع ہوئی ہیں لیکن پاک فوج نے ہر لمحہ سوات کے عوام کا ساتھ دیا ہے اور آئندہ بھی دیتی رہے گی۔ علاقے میں مثالی امن قائم ہے۔ پاک فوج امن کے قیام کے بعد حکومت سے مل کر ترقیاتی منصوبوں میں بھی حصہ لے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہم اللہ تعالی ٰ سے دعا کرتے ہیں کہ ہمارے ملک کو محفوظ اور خوشحال بنائے اور ہمار املک مضبوط پاکستان کے طور پر ابھرے۔ بعدازاں چیف آف آرمی سٹاف جنرل اشفاق پرویز کیانی ودودیہ ہال کے باہر لان میں علاقے کے عمائدین، صحافیوں اور سکول کے بچوں سے گھل مل گئے۔ انہوں نے کہا کہ پاک فوج عوام کی حفاظت کے لئے کام کر رہی ہے‘ ماضی کی طرح سوات دوبارہ خوشحال ہو گا جس کے لئے پاک فوج کے جوان سر توڑ کوشش کر رہے ہیں۔ پاک فوج قوم اور سوات کے عوام کے ساتھ ہے ۔ انہوں نے واضح کیا کہ پاک فوج کی کارکردگی پر کسی قسم کا شک نہیں ہونا چاہئے جبکہ فورسز نے ہمیشہ عوام کی خدمت کی ہے اور عوام کو تحفظ فراہم کرنا فورسز کی ذمہ داری ہے۔ آرمی چیف کے دورے کے موقع پر مینگورہ سیدوشریف روڈ پر کرفیو نافذ کر دیا تھا۔