نوازشریف سے استعفے کا مطالبہ نہیں کر رہا‘ تحقیقات تک کسی اور کو وزیراعظم بنا دیں : عمران

22 مئی 2016
نوازشریف سے استعفے کا مطالبہ نہیں کر رہا‘ تحقیقات تک کسی اور کو وزیراعظم بنا دیں : عمران

اسلام آباد (اپنے سٹاف رپورٹر سے+ نوائے وقت رپورٹ+ نیوز ایجنسیاں) پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے کہا ہے کہ پانامہ لیکس کے معاملے میں حکومت دلدل میں پھنس رہی ہے وزیر اعظم نے اسمبلی کے فلور پر جھوٹ بولا ہے انہیں اپنی صفائی پیش کرنے کیلئے جواب دینا پڑے گا انہوں نے جو چار فلیٹ خریدے ہمارے پاس ان کی رجسٹری ہے ہمارے پاس تین راستے ہیں ٹی او آر بنا کر چیف جسٹس کے تحت کمیٹی بنے عوامی سطح پر رابطہ مہم چلائی جائے اور تیسرا یہ کہ وزیر اعظم خود ہی بتادیں کہ پیسہ کہاں سے آیا اور کیسے باہر گیا‘ اس گرمی میں مولانا فضل الرحمٰن کے ساتھ جلسے کر رہے ہیں میں وزیراعظم کی بیماری پر بات نہیں کروں گا۔ ان کی صحت کے لیے دعا کرتا ہوں۔ عام انتخابات میں ان کی مدمقابل پی ٹی آئی کی حریف امیدوار ڈاکٹر یاسمین راشد وزیراعظم کیخلاف پٹیشن لے کر الیکشن کمیشن جا رہی ہیں۔ آئس لینڈ کے وزیراعظم اور میاں نوازشریف کا ایک ہی کیس ہے میں استعفے کی بات نہیں کررہا لیکن ان کے پاس اب اقتدار میں رہنے کا اخلاقی جواز ختم ہوگیا ہے۔ انہوں نے ان خیالات کا اظہار ہفتہ کو کے پی کے ہا?س میں سابق گورنر افتخار حسین شاہ کی پی ٹی آئی میں شمولیت کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے کہا کہ ٹی او آرز پر بار ایسوسی ایشن کو ساتھ لے کر چلنا چاہئے میں پارٹی رہنما?ں سے کہوں گا کہ وہ بار کو ٹی او آر میں شامل کریں پانامہ اپوزیشن کا اٹھایا ہوا ایشو نہیں، آئی سی آئی جے نے یہ ایشو اٹھایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے تین بار پارلیمنٹ کے فلور پر جھوٹ بولا، نوازشریف کا عہدے پر رہنے کا کوئی جواز نہیں، نوازشریف سے استعفے کا مطالبہ نہیں کررہا، تحقیقات ہونے تک وزیراعظم کسی اور کو وزیراعظم بنا دیں۔ 30 سال وزیراعظم نے قیادت کی ہے ایک ایسا ہسپتال بناتے جہاں انکا ٹیسٹ ہو جاتا۔ نیسکول، نیلسن کمپنی کی مریم نواز بینفشری ہیں سارا ریکارڈ موجود ہے۔ ایک انٹرویو میں عمران خان نے کہا ہے کہ پانامہ لیکس کے معاملے پر وزیراعظم نوازشریف کو ڈر ہے، اگر انہوں نے سچ بولا تو پھنس جائیں گے۔ نوازشریف کا ہر بیان دوسرے بیان سے مختلف ہوتا ہے۔ قانون کے تحت ملک کا وزیراعظم باہر پیسہ نہیں رکھ سکتا۔ نوازشریف کو اس لئے ڈر ہے کہ اگر وہ سچ بولا تو پھنس جائیں گے۔ چیئرمین تحریک انصاف عمران خان مجلس وحدت المسلمین کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لئے ان کے دھرنے اوربھوک ہڑتالی کیمپ میں پہنچ گئے اور خیبر پی کے کی جانب سے ہر ممکن تعاون کا یقین دلاتے ہوئے کہا کہ مجھے تو خیبر پی کے میں جاری ظلم و ستم کا آج علم ہواہے،ڈی آئی خان میں ایک دہشت گرد تنظیم پھر سے منظم ہوگئی ہے، لوگوں کی جان و مال کی حفاظت حکومت کا فرض ہے، خیبر پی کے حکومت مجلس وحدت المسلمین سے مکمل تعاون کرے گی۔ مجلس وحدت المسلمین کے سربراہ علامہ راجہ علامہ ناصر عباس نے کہا کہ خیبر پی کے حکومت نے اپنے کپتان کو بھی صحیح رپورٹ نہیں دی، مجھے سب سے زیادہ شکوہ عمران خان سے تھا جو اب دور ہوگیا۔ امید کرتا ہوں کہ پشاور، ہنگو، کوہاٹ اور ڈی آئی خان کے بے گناہ افراد کے قاتل کیفر کردار تک پہنچیں گے۔
عمران خان