ماں نے عدالت میں 4 بچوں کو پہچاننے سے انکار کردیا

22 مئی 2016

لاہور (اپنے نامہ نگار سے) ماں نے بھری عدالت میں اپنے چار بچوں کو شناخت کرنے سے انکار کردیا۔ ایڈیشنل سیشن جج شاہدہ سعیدنے خاتون کو سوچنے کا موقع دیتے ہوئے کارروائی 29 جون تک ملتوی کردی ہے۔ ایڈیشنل سیشن جج شاہدہ سعید کی عدالت میں چونگی امرسدھو کے رہائشی غلام مرتضیٰ نے درخواست دی کہ اسکی بیوی شاہدہ اغواکرلیا گیا ہے، اسکو برآمدکرایا جائے۔ عدالتی بیلف نے درخواست گذار غلام مرتضیٰ کی مدد سے شاہدہ بی بی کو عدالت میں پیش کر دیا۔ اس موقع پر خاتون کی والدہ رابعہ بھی موجود تھی۔ عدالت میں غلام مرتضیٰ نے چار بچوں مصباح، اسد، سمیع اور سہیل کو پیش کرتے ہوئے شاہدہ بی بی سے درخواست کی کہ وہ بچوں کی خاطر گھر واپس آجائے۔ عدالت میں شاہدہ نے بچوں اور شوہرکو شناخت کرنے سے انکارکردیا۔ اسکا کہنا تھا کہ وہ آزاد نامی شخص کے پاس اپنی مرضی سے گئی ہے، اُسے کسی نے اغوا نہیں کیا۔ آزاد اسکا رشتے دار ہے اسے واپس اسی کے پاس بھیج دیا جائے۔ عدالت نے وکیل سے معلومات حاصل کی تو معلوم ہوا کہ آزاد نامی شخص سے خاتون کا کوئی رشتہ نہیں۔ اس پر عدالت نے شاہدہ بی بی کو سکیورٹی اہلکاروں کی نگرانی میں اسکی والدہ رابعہ کے ساتھ بھجوا دیا۔ عدالت نے خاتون کی والدہ کو ہدایت کی کہ شاہدہ اپنے ہوش وحواس میں نہیں اسے29 جون کو دوبارہ عدالت میں پیش کیا جائے۔