جس دن نیٹو سپلائی بحال کی وہ حکومت کا آخری دن ہو گا : سید منور حسن

22 مارچ 2012
بٹ خیلہ (نامہ نگار+ نوائے وقت نیوز) امیر جماعت اسلامی سید منور حسن نے کہا ہے کہ انجمن غلامان امریکہ نے جس دن نیٹو سپلائی بحال کی وہ حکومت میں ان کا آخری دن ہو گا۔ جماعت اسلامی عوامی قوت سے نہ صرف نیٹو سپلائی کے راستے بند کر دے گی بلکہ حکمرانوں کو اقتدار کے ایوانوں سے نکال باہر کرے گی۔ 27مارچ کو پارلیمنٹ ہاﺅس کے سامنے امریکی ایجنٹوں اور پاکستان کی خودمختاری بیچنے والوں کے خلاف احتجاجی دھرنا دیا جائے گا۔ امریکہ نے آصف زرداری کو بچانے کی کوشش کی اور عوام سے انتخاب کا حق چھینا گیا تو ملک میں مصر اور تیونس کی طرح انقلاب آئے گا۔ نوازشریف نے ”گو زرداری گو“ کا نعرہ لگاکر قوم کو دھوکہ دیا وہ عملاً آصف زرداری کی کرپشن کو تحفظ دے رہے ہیں، مفاہمت اور جمہوریت کے نام پر زرداری اور نوازشریف ایک ہیں، حکمران امریکی ایجنڈے پر عمل پیرا ہیں، دہشت گردی کیخلاف جنگ سے واپس آنا چاہئے۔ 23مارچ کو فیصل آباد، 29مارچ لیہ، 30مارچ ملتان جبکہ اپریل میں ڈیرہ غازیخان، اوکاڑہ، جمرود اور مئی میں ڈیرہ اسماعیل خان اور مینگورہ میں جلسہ ہائے عام منعقد کئے جائیں گے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ظفر پارک بٹ خیلہ میں بڑے جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ منور حسن نے کہاکہ حکومت نے پارلیمنٹ کی پہلی متفقہ قراردادوں پر عمل نہیں کیا اور قومی امنگوں اور توقعات کا خون کیا۔ اب وہ امریکی سپلائی لائن بحال کرنے کے لئے راہیں تلاش کر رہی ہے، آج بھی حساس ہوائی اڈے امریکی قبضے میں ہیں۔ بلوچستان کے مسئلے پر حکمران مسلسل غیرسنجیدگی کا مظاہرہ کر رہے ہیں اور امریکی ایجنڈے کو آگے بڑھا رہے ہیں۔ پیپلزپارٹی نے کراچی کو بھتہ خوروں اور ٹارگٹ کلرز کے حوالے کر دیا ہے۔ پیپلزپارٹی اور اتحادیوں کے تمام جرائم کا حساب لیا جائیگا۔