گیارہ سال کے طویل انتظار کے بعد پاکستان ایشین کرکٹ کا نیا بادشاہ بن گیا ہے۔

22 مارچ 2012 (21:28)
گیارہ سال کے طویل انتظار کے بعد پاکستان ایشین کرکٹ کا نیا بادشاہ بن گیا ہے۔
گرتے سنبھلتے اور ٹھوکریں کھاتے ہوئے گرین شرٹس نے آخرکار ون ڈے کرکٹ میں اہم سنگ میل عبور کرہی لیا۔ سن دوہزار سے لیکر دوہزار بارہ تک بارہ سالہ طویل اور صبرآزما انتظار کے بعد پاکستان نے ایشیا کا چیمپئن ہونے کا اعزاز دوسری بار حاصل کیا ہے۔ بنگلہ دیش میں ہونے والے اس ایونٹ میں پاکستان نے میزبان کیخلاف ٹورنامنٹ کا افتتاحی میچ گیارہ مارچ کو کھیلا اور اپنی پہلی منزل کانٹے دار مقابلے کے بعد فتح کی صورت میں عبور کی۔ اس میچ میں شاہینوں نے ٹائیگرز کو اکیس رنز سے زیرکیا۔ پندرہ مارچ کو ہونے والے دوسرے معرکے میں پاکستانی سبوتوں نے نہ صرف سری لنکا کو باآسانی شکست دی بلکہ ہدف کو چالیس اوورز میں عبور کرکے بونس پوائنٹ بھی حاصل کیا اور فائنل کیلئے اپنی سیٹ بک کرالی۔ اٹھارہ مارچ کو روایتی حریف بھارت کیخلاف میچ حسب روایت کافی دلچسپ رہا اور اوپنرز کی ریکارڈ شراکت کی بدولت گرین شرٹس نے بھارت کو تین سو انتیس رنز کا ہدف دیا تاہم ویرات کوہلی کے ناقابل فراموش اننگز کی بدولت بھارت نے یہ ہدف دو اوور پہلے ہی عبور کرکے مصباح الیون کو پہلی شکست کا مزہ چکھایا تاہم گرین شرٹس فائنل کیلئے پہلے ہی کوالیفائی کرچکے تھے۔ بائیس مارچ کو ہونے والے اس تاریخی فائنل میں پاکستان کے اہم مہرے تو قابل قدر کارکردگی نہ دکھا سکے تاہم مجموعی طور پر ٹیم نے ایک قابل مزاحمت سکور کیا اور باؤلرز نے احسن طریقے سے اپنی ذمہ داری نبھاتے ہوئے پاکستان کو فتح سے ہمکنار کرایا۔