صحافت ہو یا کوئی اور پیشہ پاکستان کی روایات کے منافی کام نہیں ہوسکتا: انوشہ رحمان

22 فروری 2017 (15:28)

وزیر مملکت انوشے رحمان نے صحافی کا موبائل چھیننے کے معاملے پر ردعمل دیتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے ساتھی کےساتھ سپریم کورٹ کی عمارت میں گفتگو کررہی تھی جس پر صحافی نے چھپ کر ان کی ویڈیو بنائی، فلم بنانے والے شخص نے معافی بھی مانگی. ان کا کہنا تھا کہ انہوں نے کسی کا موبائل نہیں چھینا، جو بھی تھا چھپ کر ویڈیو بنا رہا تھا، اس کی اجازت نہیں دی جاسکتی. انوشہ رحمان نے صحافیوں سے سوال کیا کہ سپریم کورٹ کی حدود میں نجی گفتگو کی چھپ کرفلم بنانا کیا درست اور مناسب ہے؟ موبائل فون کا غلط استعمال نہیں کیا جانا چاہیے، صحافت ہو یا کوئی اور پیشہ پاکستان کی روایات کے منافی کام نہیں ہوسکتا۔