مزاروں کی سکیورٹی فول پروف بنانے کیلئے پلان تیار محکمہ اوقاف نے حکومت سے 27 کروڑ 50 لاکھ روپے مانگ لئے

22 فروری 2017

لاہور (خصوصی نامہ نگار) سیہون شریف میں صوفی بزرگ حضرت لعل شہباز قلندر سمیت ملک بھر میں دہشت گردی کے پے درپے واقعات کے بعد محکمہ اوقاف پنجاب کو بھی ہوش آگیا ۔محکمہ اوقاف کے ایک اعلیٰ سطح کے اجلاس میں ؎پنجاب بھر میں مزاروں کی سیکیورٹی کو بہتر و فول پروف س بنانے کے لئے پنجاب حکومت سے 27کروڑ 50لاکھ حاصل کر نے کا فیصلہ کیا ہے۔محکمہ کے پنجاب بھر میں موجود بڑے اور سکیورٹی کے نکتہ نظر سے اہم مزاروں کے حفاظتی اقدامات کرنے کے لئے پالیسی وضع کی ہے، جس کے تحت لاہور ، ملتان ، قصور، ڈی جی خان سمیت صوبہ بھر میں مزارات کی سکیورٹی کے لئے فنڈز مانگنے کا فیصلہ کیا گیا ۔ فنڈز ملنے کی صورت میں فنڈز سے مزاروں کی چار دیواری کو اونچا کرنے اور اس پر خار دار تار لگانے کے ساتھ ساتھ سی سی ٹی وی کیمروں کی تنصیب اور واک تھرو گیٹس و میٹل ڈی ٹیکٹرز نصب کئے جائیں گے ۔ ذرائع کے مطابق اس حوالے سے گزشتہ روز ایوان اوقاف میں ایک میٹنگ ہوئی جس میں پنجاب میںموجود حساس درباروں کی لسٹ مرتب کرنے کے ساتھ ساتھ ان میں سیکیورٹی بڑھانے کے لئے کئے جانے والے متوقع انتظامات کے حوالے سے فیصلہ کیا گیا ۔ذرائع کے مطابق چند روز اس میں اس حوالے سے باقاعدہ ایک مراسلہ پنجاب حکومت کو ارسال کر دیا جائے گا۔