ڈاکٹر مطیع الرحمن اسلام متحدہ پاکستان کے بڑے حامی تھے : شاہد رشید

22 فروری 2017

لاہور( خصوصی رپورٹر) ڈاکٹر مطیع الرحمن اسلام کے بہادر اور ان تھک سپاہی تھے۔ آپ متحدہ پاکستان کے حامی تھے اورآپ کے نزدیک 1971ء میں لسانی قومیت کا نعرہ محض ایک ڈھونگ اور دوقومی نظریہ کو ختم کرنے کی سازش تھا۔ایک بنگالی ہونے کے باوجود انہوں نے وصیت کی کہ مجھے مغربی پاکستان میں دفن کیا جائے۔ڈاکٹر مطیع الرحمن کا مشن آج بھی زندہ اور جاری ہے۔ان خیالات کااظہار سیکرٹری نظریۂ پاکستان ٹرسٹ شاہد رشید نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان ڈاکٹر مطیع الرحمن کی برسی کے موقع پرخصوصی لیکچر کے دوران کیا ۔شاہد رشید نے کہا کہ ڈاکٹر مطیع الرحمن یکم مارچ 1934ء کو کومیلا کے ایک گائوں میں پیدا ہوئے۔ انہوں نے مشرقی پاکستان کی علیحدگی کو بھی تسلیم نہیں کیا اور لندن چلے گئے۔