جرائم پیشہ تارکین وطن کو جلد ڈیپورٹ کیا جائے گا‘ امریکہ: ٹرمپ کے خلاف مظاہرے جاری

22 فروری 2017

واشنگٹن (نوائے وقت رپورٹ) امریکی ہوم لینڈ سکیورٹی نے غیرقانونی تارکین وطن کے حوالے سے اعلامیہ میں کہا ہے کہ جرائم میں ملوث تارکین وطن جلد ڈی پورٹ کئے جائیں گے۔ فراڈ کرنے والے تارکین وطن بھی ڈیپورٹ ہونگے۔ جرائم میں ملوث تارکین وطن کی تعداد ایک کروڑ دس لاکھ ہے۔ تارکین وطن کی گرفتاریوں کیلئے دس ہزار اہلکار بھرتی کئے جائیں گے۔ کانگریس نے آپریشن کی منظوری دیدی ہے۔ ایمنسٹی انٹرنیشنل نے ہوم لینڈ سکیورٹی کے اعلامیہ پر تشویش کا اظہار کرتے کہا ہے کہ آپریشن انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی ہے، امیگریشن پالیسیوں پر ٹرمپ انتظامیہ کے فیصلے غیرانسانی ہیں۔ واشنگٹن اور نیویارک سمیت کئی امریکی ریا ستوں میں صدر ٹرمپ کے خلاف مظاہروں کا سلسلہ جاری رہا۔ نیویارک میں ہزاروں افراد نے ٹرمپ انٹرنیشنل ہوٹل کے قریب کولمبس سرکل پر مظاہرہ کیا۔ نیویارک کے علاوہ لاس اینجلس، شکاگو ، اٹلانٹا اور واشنگٹن میں بھی صدر ٹرمپ کے خلاف ریلیاں نکالی گئیں۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ صدر ٹرمپ کی پالیسیاں ملک کو نقصان پہنچا رہی ہیں۔ لندن میں صدر ٹرمپ کے مجوزہ دورہ برطانیہ کے خلاف ہزاروں افراد نے مظاہرہ کیا۔ لندن ہی میں برطانوی پارلیمنٹ کے باہر سینکڑوں افراد نے تارکین وطن کے حق میں مظاہرہ کیا۔ ایک ٹی وی پروگرام میں میئر لندن صادق خان نے کہا موجودہ صورتحال میں امریکی صدر کا برطانیہ میں شاندار استقبال نہیں ہونا چاہئے۔ ٹرمپ نے کہا یہودی مخالف دھمکیاں خوفناک اور درد ناک ہیں۔ امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کے سوئیڈن میں غیرقانونی امیگریشن سے متعلق دیئے گئے بیان کے بعد سٹاک ہوم میں پرتشدد مظاہرے پھوٹ پڑے، مشتعل افراد نے درجنوں گاڑیاں نذرآتش کر دیں۔