قائمہ کمیٹی داخلہ میں سکیورٹی فورسز کو خراج تحسین کی متفقہ قرارداد، نثار پھر نہیں آئے

22 فروری 2017

اسلام آباد (آن لائن + آئی این پی) قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے ملک بھر میں دہشت گردی کے واقعات میں متاثرہ افراد اور ان کے خاندان کا ریکارڈ بنوانے اور انہیں دی جانے والی امداد کا ریکارڈ تیار کرنے سے متعلق نادرا کو خصوصی ہدایات دیدی ہیں جبکہ ان شہداءکی لسٹ میں سکیورٹی فورسز کے جوان اور شدید زخمی ہونے والوں کا بھی ڈیٹا شامل کرنے کی ہدایت کی ہے۔ قائمہ کمیٹی برائے داخلہ کا اجلاس گزشتہ روز نادرا ہیڈکوارٹر اسلام آباد میں ہوا۔ اجلاس کے دوران گزشتہ میٹنگ کے منٹس پر چند ممبران نے اپنے تحفظات کا اظہارکیا جبکہ پبلک سیکٹر ڈویلپمنٹ پروگرام (پی ایس ڈی پی) کے اگلے مالی سال2017-18کی بھی منظوری لی گئی۔ کمیٹی کے ممبر شیخ محمد اکرم نے چیئرمین کی توجہ اس جانب مبذول کرائی کہ آج تک وزیرداخلہ چوہدری نثار کمیٹی کے اجلاس میں شریک نہیں ہوئے۔ اس پر چیئرمین کمیٹی رانا شمیم احمد نے کہا کہ گزشتہ سال قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں وزیرداخلہ نے شرکت کی تھی جس پر شیخ محمد اکرم نے کہاکہ اس بات کو بھی تو 365 دن گزرگئے ہیں۔ ہمارے دورمیں رحمان ملک باقاعدگی سے قائمہ کمیٹی کے اجلاسوں میں شرکت کرتے تھے جس پراجلاس میں شریک چند ممبران نے رحمان ملک کی شخصیت پر تنقیدکرتے ہوئے کہاکہ رحمان ملک کا تو ذکر ہی نہیں کرنا چاہئے۔آئی این پی کے مطابققومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے وزارت داخلہ کو ملک کی موجودہ سکیورٹی صورتحال اور نیشنل ایکشن پلان پر عمل در آمد سے متعلق تفصیلی بریفنگ دینے کی ہدایت کر دی جبکہ کمیٹی نے ملک میں حالیہ دہشت گردی کی شدید مذمت کرتے ہوئے سکیورٹی فورسز کی قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کرنے کے لئے متفقہ قرارداد کی منظوری دی ،قرارداد میں دہشت گردی میں شہید ہونے والوں کا وفاقی سطح پر ڈیٹا مرتب کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔