انٹرویو سے روکے جانے پر ایجوکیٹر بھرتی کیلئے آنے والی خواتین کا شدید احتجاج

22 فروری 2017

راولپنڈی(اپنے سٹاف رپورٹر سے) ایجوکیٹر بھرتی کیلئے آنے والی خواتین آرٹس اور کامرس امید واروں کو انٹرویو کیلئے مسلم ہایئر سکول سید پور روڈ میں داخل ہونے سے روکے جانے پر شدید احتجاج کرتے ہوئے وزیر اعلی پنجاب میاں شہبازاز شریف سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فوری طورپر نوٹس لے کر انٹرویو میں شامل کرنے کے احکامات جاری کریں اور مقامی محکمہ تعلیم کے خلاف کارروائی کریں بصورت دیگر احتجاج جاری رکھنے پر مجبور ہوں گے اس موقع پر اس موقع سمیر جبین،آمنہ عباس، میمونہ ظہیر، غلام فاطمہ راحت یاسمین، محمد جلیل ،کاشف حسین، طیب شعیب، وسیم افتخار، محمد شہزاد سمیت 6تحصیلو ں کی خواتین امید وار بھی موجود تھیںپریس کلب کے باہر سائرہ بی بی، صنم ذاکر،زرینہ ناز، فوزیہ شبیر، ثناءنواز،ناظمہ بی بی اور دیگر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ روز راولپنڈی کے دور دراز علاقوں سے انٹرویو کیلئے آنے والی خواتین کو جب روکا گیا ہم نے احتجاج کیا جس پر سی ای او ڈسٹرکٹ ایجوکیشن اتھارٹی قاضی ظہورالحق نے ہمیں سکول میں بلوایا اورخود دوسر دروازے سے نکل گیا جب کہ ان کے ساتھ کسی قسم کے مذکرات نہیں ہوئے دورراز علاقوں سے آنے والی پڑھی لکھی بےروزگار خواتین کو محکمہ تعلیم کے حکام نے یہ کہہ کرانٹرویوسے روکا گیا کہ آرٹس اور کامرس گروپ کا انٹرویو نہیں یہاں سائنس مضامین والے شامل ہوں گے جبکہ حکومت پنجاب کی طرف سے شائع ہونے والے اشتہارمیں تعلیم بی اے شرط تھی جو اچانک ختم کر دی گئی ہے جو تعلیم یافتہ لوگوں کے ساتھ مذاق کے مترادف ہے سی ای او سمیت محکمہ کا کوئی افسر کوئی شنوائی نہیں کر رہا ہے وزیر اعلیٰ پنجاب فوری نوٹس لے کر انٹرویو میں شامل ہونے کےاحکامات جاری کریں ورنہ احتجاج جاری رکھنے پر مجبور ہوں گے۔