پی اے سی ذیلی کمیٹی نے وزارت پٹرولیم کے بیشتر آڈٹ اعتراضات نمٹا دیئے

22 فروری 2017

اسلام آباد (خبر نگار خصوصی) پبلک اکاونٹس کمیٹی کی ذیلی کمیٹی نے کہا کہ سر کاری افسران قانون پر عمل نہیں کررہے ہیں جس کی و جہ سے قو می خزا نے کو نقصان ہو رہا ہے اور اداروں کے سر براہپیپرارولز کے خلاف کام کر رہے ہیں کمیٹی کوآڈٹ حکام نے بتایا کہ پی پی ایل ، او جی سی ڈی ایل، ایس این جی پی ایل اور پی ایس او نے امریکی جریدے ” فارن افیئرز “ کو ایک کروڑ 70لاکھ روپے کا اشتہار دے دیا جس میں پیپرا رولز کی بھی خلاف ورزی کی گئی، قومی خزانے کو نقصان پہنچانے والوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی، ذیلی کمیٹی نے 5دن میں ذمے دار کا تعین کرنے اور انکوائری کر کے رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کر دی، کنونیئر کمیٹی شفقت محمود نے کہا ہے کہ انتہائی اہم معاملہ ہے ، ایسے نہیں چھوڑیں گے۔ ذیلی کمیٹی کا اجلاس منگل کو کنونیئر شفقت محمود کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہاوس میں ہوا جس میں وزارت پٹرولیم و قدرتی وسائل کے مالی سال 11-2010 کے آڈڈٹ اعتراضات کا جائرہ لیا گیا۔آڈٹ حکام نے کمیٹی کو بتایا کہ وزارت نے گیس ڈویلپمنٹ سرچارج وصول کرنے والی گیس کمپنیوں سے 3.697 ملین روپے کی رقم وصول نہیں کی،گیس کمپنیاں یہ پیسے قومی خزانے میں جمع کروانے کی بجاے خود استعمال کر لیتی ہیں،جس پر سوئی نادرن حکام نے بتایا کہ کمپنیوں نے حکومت سے پیسے لینے ہیں دینے نہیں،فی یونٹ گیس 480 روپے میں خرید کر کمرشل صارفین کو 410 روپے کی قیمت پر دے رہے ہیں،70 روپے فی یونٹ نقصان ہو رہا ہے ، حکومت سے کلیم نہ کریں تو کیا کریں۔کنونیئر کمیٹی نے کہا کہ اگر پرچیز اور سیل پراسس میں فرق ہے تو حکومت سے زر تلافی مانگیں، ڈویلپمنٹ سرچارج الگ چیز ہے،یہ معاملہ وزارتوں کے درمیان ہے، پانی و بجلی, پٹرولیم اور خزانہ وزارت مل بیٹھ کر مسلہ حل کر سکتی ہیں،کمیٹی نے سرکلر ڈیٹ کی ایڈجسٹمنٹ ہونے تک گیس ڈویلپمنٹ سرچارج سے متعلقہ پیرے ملتوی کر دیے کنونیئر کمیٹی نے کہا کہ قوانین موجود ہیں، میرے پاس پیرے سیٹل کرنے کا اختیار نہیں۔ سوئی ناردرن گیس کمپنی کے حکام نے بریفنگ میں بتایا کہ پنجاب میں گیس چوری کا سب سے زیادہ تناسب بہاولپور میں ہے، ہنگو اور بعض دیگر علاقوں میں جلوس نکال کر اور بندوق کے زور پر گیس چوری کی جاتی ہے،گزشتہ برس تین لاکھ نئے گیس کنکشن دیئے گئے، سال رواں پانچ لاکھ گیس کنکشن دیئے گئے ہیں، اب بھی 13 لاکھ درخواستیں زیر سماعت ہیں۔ کوشش ہے کہ آئندہ زیادہ سے زیادہ کنکشن دیں۔ ذیلی کمیٹی نے وزارت پٹرولیم کے بیشتر آڈٹ اعتراضات نمٹا دیے جبکہ 1 کروڑ 32 لاکھ کے قدرتی گیس پر رائلٹی کی عدم ادائیگی کا معاملہ م¶خر کر دیا گیا۔

نفس کا امتحان

جنسی طور پر ہراساں کرنے کے خلاف خواتین کی مہم ’می ٹو‘ کا آغاز اکتوبر دو ...