وزیراعظم آزادکشمیر کی زیرصدارت اجلاس‘ منصوبوں پر عمل درآمد کا تفصیلی جائزہ

22 فروری 2017

اسلام آباد ( نمائندہ خصوصی ) وزیراعظم آزاد حکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان کی زیر صدات ایوان وزیراعظم مظفر آباد میں منعقدہ اجلاس میں آزادکشمیر کی تعمیر وترقی اوراقتصادی خوشحالی کے لیے وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف کی طرف سے اعلان کردہ منصوبہ جات پر عمل درآمد کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔اجلاس میں وفاقی وزیر منصوبہ بندی وترقیات احسن اقبال ،آزادکشمیر کابینہ کے اراکین، چیف سیکرٹری سمیت ریاستی حکام بھی شریک تھے۔ اجلاس میں پاکستان چین اقتصادی راہداری منصوبہ جات اور وفاق کے زیر اہتمام جاری واعلان کردہ منصوبہ جات پر تفصیلی غوروغوض کیا گیا۔اجلاس میں آزادکشمیر میں سیاحت کے فروغ کے لیے بین الاقوامی فرم سے ماسٹر پلان تیار کرنے کے عمل کا جائزہ لیا گیا آزاد حکومت وزیر اعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف کی ہدایات کی روشنی میں آزاد خطہ کو سیاحت کے لیے رول ماڈل بنانے کے حوالے سے بین الاقوامی فرم کے تعاون سے ماسٹر پلان کی تیار ی کا عمل شروع کیا جارہا ہے ۔ وزیراعظم پاکستان میاں محمد نوازشریف کے ویڑن 2025کے تحت آزادکشمیر میں معاشی واقتصادی ترقی کے منصوبوں پر بھی تفصیلی تبادلہ خیال کیاگیا۔ اجلاس میں اقتصادی راہداری منصوبے کے تحت آزادکشمیر کے لیے منظورکیے گئے منصوبہ جات اور آئندہ شامل کیے جانے والے منصوبوں سے متعلق حکمت عملی بھی زیر غور لائی گئی۔ اس موقع پر وفاقی وزیر احسن اقبال نے کہاکہ وزیراعظم پاکستان کی ہدایت کے مطابق آزادکشمیر میں دستیاب پن بجلی کے مزید منصوبہ جات کو سی پیک کا حصہ بنایا جارہا ہے تاکہ توانائی کی ضروریات پوری ہوسکیں۔ وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف نے آزادکشمیر کے لیے جتنے بھی منصوبہ جات کے اعلانات کیے ہیں ان پر تیزی سے پیش رفت جاری ہے اور جملہ وفاقی وزارتیں ان اعلانات پر عملدرآمد سے متعلق ہر پندرہ روز پر وزیراعظم پاکستان کو ہونے والی پیش رفت سے آگاہ کرتی ہیں۔ وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف نے آزادکشمیر کی ترقی اور خوشحالی کے لیے جتنے بھی منصوبہ جات کا اعلان کیا ہے ان پر عملدرآمد ہوگا اوراقتصادی راہداری منصوبے میں آزادکشمیر کو دیگر صوبوں کے مساوی حصہ دیا جائے گا ۔ اس موقع خطا ب کرتے ہوئے وزیراعظم آزادحکومت ریاست جموں وکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ وزیراعظم پاکستان میاں محمد نواز شریف نے جس انداز میں تحریک آزادی کشمیر کو قومی وبین الاقوامی سطح پر اجاگر کرنے اورآزادکشمیر کی تعمیر وترقی میں دلچسپی لی ہے ماضی میں اس کی مثال نہیں ملتی۔ دریں اثناءاحسن اقبال نے کہا ہے کہ قومی نوعیت کے منصوبہ جات عرصے بعد بنتے ہیں انکی معیاری اور بروقت تکمیل ہونی چاہیے ۔منصوبہ جات کی معیاری تکمیل کے لیے بروقت فنڈنگ ، اچھاکنٹریکٹر اور پراجیکٹ منیجمنٹ ناگزیر ہوتی ہے ۔ آزاد جموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی کی عمارت کو تاریخی نوعیت کی عمارت بنائیں گے ۔ عمارت کی تعمیر کے لیے اچھی شہرت والا کنٹریکٹر رکھا جائے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کے روز آزاد جموں وکشمیر اسمبلی کی عمارت کے بارہ میں بریفنگ کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کیا۔