قائمہ کمیٹی ہا¶سنگ نے وزارت کے سالانہ ترقیاتی پروگرام کی منظوری دیدی

22 فروری 2017

اسلام آباد (نمائندہ خصوصی) قومی اسمبلی کی مجلس قائمہ برائے ہا¶سنگ کے اجلاس میں وزارت کے آئندہ مالی سال کے 12 ارب 34 کروڑ 43 لاکھ روپے حجم کے سالانہ ترقیاتی پروگرام کی منظوری دیدی۔ یہ رقم 149 ترقیاتی سکیموں پر خرچ کی جائے گی اور پاک پی ڈبلیو ڈی عمل درآمد کرے گا۔ کمیٹی کا اجلاس حاجی محمد اکرم انصاری کی صدارت میں ہوا۔ وزارت کی طرف سے آئندہ مالی سال کے لئے 17 ارب 19 کروڑ روپے حجم کے ترقیاتی پروگرام کو پیش کیا گیا۔ کمیٹی نے اس میں سے 46 سکیموں کو غیر ضروری قرار دے کر منصوبے سے خارج کردیا۔ ان سکیموں کی لاگت 4 ارب 85 کروڑ روپے تھی۔ کمیٹی نے اس بات کا نوٹس لیا کہ ترقیاتی منصوبوں پر کام کی رفتار کی سست روی کے باعث پی سی ون پر نظرثانی کرنا پڑتی ہے اور لاگت بڑھتی ہے۔ کمیٹی نے وزارت خزانہ کو ہدایت کی ترقیاتی منصوبوں کے لئے فنڈز بروقت جاری کئے جائیں تاکہ کام شروع ہو سکے۔ کمیٹی نے وزارت ہا¶سنگ کو بھی ہدایت کی کہ کمیٹی کو اس بات کی رپورٹ پیش کی جائے کہ کون سے منصوبے وفاقی بجٹ میں شامل ہوئے ہیں اور کن منصوبوں کو شامل نہیں کیا گیا۔ اجلاس میں سرکاری گھروں میں غیر قانونی قبضہ کے بارے میں غور کیا گیا۔ کمیٹی نے ہدایت کی سرکاری رہائش گاہوں میں رہائش پذیر لوگوں کی تفصیلات کی رپورٹ دی جائے۔ کمیٹی نے یہ ہدایت بھی کی کہ سرکاری مہمان خانوں میں کمرہ دینے کے ضابطہ کار کے بارے میں بتایا جائے۔ حکومتی رکن رجب علی بلوچ نے کہا کہ لاہور اور کراچی کے سرکاری مہمان خانوں میں جرائم پیشہ افراد کو بھی کمرے دیئے جاتے ہیں۔ کمیٹی نے اس معاملہ کی تحقیقات کا فیصلہ کیا اور ہدایت کی کہ ٹھہرنے والے افراد کی تفصیلات دی جائیں۔ کمیٹی نے ہدایت کی وفاقی وزیر ہا¶سنگ کمیٹی کے اجلاس میں شرکت کیا کریں۔