مقبوضہ کشمیر : بھارتی فوج کی بربریت ، 2 نوجوان شہید ،پیلت کے چھروں سے زخمی طالب علم بھی دم تور گیا

22 فروری 2017

سرےنگر (نیٹ نیوز+ ایجنسیاں) بھارتی فوج نے مقبوضہ کشمیر میں گذشتہ روز بربریت کا مظاہرہ کرتے ہوئے 3 نوجوانوں کو شہید کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق بھارتی فورسز کے پےلٹس سے زخمی ہونے والا نوجوان وسےم احمد ٹھوکر 6ماہ تک موت و حےات کی کشمکش مےں رہنے کے بعد شہےد ہوگےا۔ ضلع کولگام سے تعلق رکھنے والا وسےم احمد کو گزشتہ سال مرہامہ مےں پرامن مظاہرے کے دوران بھارتی فورسز کے 300 سے زائد پےلٹس لگے تھے۔ وسےم احمد ٹھوکر کی شہادت سے حالےہ احتجاجی تحرےک کے دوران شہےد ہونے والے کشمےرےوں کی تعداد 120 تک پہنچ گئی۔ احتجاجی تحرےک 8 جولائی 2016ءکو معروف نوجوان رہنما برہان وانی کے ماورائے عدالت قتل کے بعد شروع ہوئی تھی۔ درےں اثناءبھارتی فوجےوں نے اپنی رےاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائی مےں منگل کو ضلع راجوڑی کے علاقے کےری مےں محاصرے اور تلاشی کی کارروائی کے دوران اےک کشمےری نوجوان کو شہےد کردےا۔ ادھرضلع بانڈی پورہ کے علاقے صدرہ کوٹ پائےن مےں دوسرے روز بھی زبردست بھارت مخالف مظاہرے جاری رہے۔ علاقے کے لوگوں نے صحافےوں کو بتایا کہ بھارتی فوجی رات کے دوران گھروں مےں داخل ہوئے، گھرےلو سامان کی توڑ پھوڑ کی اور مکےنوں کو تشدد کا نشانہ بناےا۔ ادھر ضلع بارہمولہ مےں پٹن کے علاقے محمود پورہ مےں کئی روز سے لاپتہ نوجوان شاہد احمد گنائی کی گولیوں سے چھلنی نعش نالے سے برآمد ہوئی۔ علاقے مےں اےک اور نوجوان 18سالہ سےد جاوےد رضوی بھی لاپتہ ہو گیا جس سے اس کے اہل خانہ شدےد تشوےش مےں مبتلا ہےں۔ مقامی لوگوں کے مطابق جاوید رضوی کو بھی بھارتی فورسز کے اہلکاروں نے غائب کیا۔ دوسری طرف مقبوضہ کشمیر میں سیاسی نظربندوں کی مسلسل نظربندی اور انکی حالت زار کے خلاف حیدر پورہ سرینگر میں احتجاجی مظاہرہ اور دھرنا دیا گیا۔ مظاہرے اور دھرنے کی کال کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے جیلوں میں نظر بند حریت رہنماﺅں اور کارکنوں کے ساتھ یکجہتی کیلئے دی تھی۔ مظاہرین نے اس موقع پر تمام کشمیری نظربندوں کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا۔ احتجاجی مظاہرے اور دھرنے کے دوران اسلام و آزادی کے حق اور بھارت کے خلاف فلک شگاف نعرے بلند کئے گئے۔ مظاہرین نے ہاتھوں میں کتبے اٹھا رکھے تھے جن پر نظربندوں سے ا ظہاریکجہتی اور انکی رہائی کے مطالبات درج تھے۔ اس موقع پر حریت رہنما نور محمد کلوال، راجہ معراج الدین اور غلام نبی ذکی نے تقاریر کیں اور کشمیری نظربندوں کے ساتھ جیلوں میںروا رکھے جارہے ناروا سلوک کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے غیر آئینی اور غیر انسانی قرار دیا۔ حریت رہنماﺅںنے اپنے خطاب میں کہاکہ بی جے پی اور پی ڈی پی کی مخلوط انتظامیہ نے ہزاروں بے گناہ کشمیریوں کو کالے قوانین کے تحت جیلوں میں نظربند کررکھا ہے اور گرفتاریوں کا سلسلہ مسلسل جاری ہے۔ انہوںنے کہاکہ انتظامیہ نے نہتے کشمیریوں پر ظلم و تشددکے تمام سابقہ ریکارڈ توڑ دیئے ہیں۔
کشمیر

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...