سانحہ سہون پرخون کے آنسو

22 فروری 2017

جمعرات 16 فروری 2017 ہموطتوں پرقیامت صغرابن کرآیاکے جس دن وطن عزیز کے ہزاروں مرد خواتین وبچے حسب معمول حضرت لال شہباز قلندر رحمت سے دلی عقیدت کے اظہار میں انکے مزار پر دھمال میں مصروف تھے کہ دہشت گرد انکی صفوں میں داخل ہو کر نہ صرف اپنی زندگی کو ختم کر کے بڑی تعداد میں زائرین کو بھی اپنے ساتھ اس دارفانی سے کوچ کرانے کا بلا جواز سبب بنا ۔ بڑی تعداد میں لوگ خالق حقیقی سے جاملے‘ سیکٹروں افراد شدید زخمی ہوئے جواب اپنے اہل خانہ کے امتحان کا بھی سبب بنیگے ۔اللہ تعالیٰ مرحومین کی مغفرت فرمائے اورزخموں کو جلد شفاءیاب فرمائے۔ اس سانحہ سے پوری قوم لرز اٹھی ہے پورا ملک دہل گیا ہے ۔صبر کی تلقین کرنے والے بھی اہل وطن کے اس جانی ومالی نقصان کو دیکھ کر برداشت کرنے کی پوزیشن میں نہ رہ سکے آخر کار انکو اب صبر کا دامن چھوڑ کر مسلح افواج اور دیگر سیکیورٹی اداروں کو یہ کہنا پڑا کہ دہشت گردوں کو خواہ وہ بیرون ملک ہو یااندرون ملک پکڑو اور صفایا کرو ۔ان احکامات سے پاکستان کی مسلح افواج و دیگر سیکیورٹی ایجنسیوں نے ان ملک وقوم دشمن دہشت گردوں کے صفائے کے عملی اقدامات کئے ہیں اور یہ کام تیزرفتاری کیساتھ جاری ہے۔ اس عمل سے پوری قوم مزید تندرست توانا اورسیسہ پلائی ہوئی دیوار کی طرح مستحکم ہو گئی ہے اور دہشت گردوں کے خلاف انکے حوصلے بلند ہوئے ہیں۔ دشمن پاکستانی قوم کو کسی بھی انداز میں اور کسی بھی محاذ پر شکست نہیں دے سکتا ہمارے عزم جواں ہیں پوری قوم مسلح افواج اور سیکیورٹی اداروں کیساتھ ہے اور دہشت گردوں کے خلاف ہر کارروائی میں انکے ساتھ شریک ہے۔ (صغیر علی صدیقی کراچی)

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...