مسلمانوں کو فرقہ واریت کی بجائے متحد ہونے کی ضرورت ہے: شجاع الدین

21 اکتوبر 2012

رائے ونڈ (نامہ نگار) تبلیغی جماعت کے ممتاز عالم دین شجاع الدین خدام اور روحانی شخصیت صاحبزادہ لطیف الرحمن شاہ نے کہاکہ مسلمانان اسلام کو فرقہ واریت کے فسادات میں پڑکر وقت ضائع کرنے کی بجائے متحد ہوکر کفر کے خلاف جنگ کرنا چاہئے،وہ مرکزی انجمن تاجران کے ڈپٹی جنرل سیکرٹری حبیب اللہ خاں کے بھائی نوراللہ خاں کی مسلح روڈڈکیتی کے دوران جان بچ جانے پرمنعقدہ ختم قرآن اور دعائے شکر کی محفل سے خطاب کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کررہے تھے ،انہوں نے کہا کہ توہین رسالت انگریز کا 200سال پرانا ایجنڈا ہے ، طالبان کو ایک سازش کے تحت دہشت گرد ثابت کیا جارہا ہے ،جس میں ہمارے ملک کے حکمران بھی شامل ہیں،انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کا پیغام امن ہے اوراسلام رحمت اور سلامتی کا دین ہے ،انہوں نے کہا کہ اسلام آباد میں بیٹھے حکمران ملالہ پر حملہ کرنے والوں کو تلاش کریں ، اورطالبان پر بے جا الزامات لگانے سے گریزکریں اور اگر وہ اصلی مجرموں کو تلاش نہیں کرسکتے تو کرسی چھوڑ کر اقتدار سے الگ ہوجائیں ہم خود مجرموں کو قوم کے سامنے لے آئیں گے ،انہوں نے کہا کہ موجودہ حکمران صرف امریکہ اور برطانیہ کے ہمدرد ہیں ،انہوں نے کہا کہ دوہری شہریت رکھنے والے پاکستان سے مخلص نہیں ،جو ہمارے اللہ کی کبریائی اور ہمارے نبی کی شان میں گستاخی کرے گا اس کا سرحضرت عمر فاروق کی سنت پوری کرتے ہوئے تن سے جد کردیں گے ،ناموس رسالت پرمرمٹنا ہی مسلمان کی شان ہے ،اس موقع پر صدر مسلم لیگ(ن) محمد عباس ملک،شہزاد نذیر سندھو ،جنرل سیکرٹری مسلم لیگ(ن) اکرم گجر،چیئرمین سکیورٹی انجمن تاجران غلام حسن لبھا،وائس چیئرمین چودھری جاوید مسعوداور درجنوں کاروباری اور سماجی شخصیات شریک تھیں۔