پمز میں ینگ اور ریگولر ڈاکٹرز میں تصادم،ایک کا بازو ٹوٹ گیا

21 اکتوبر 2012


 اسلام آباد (خبر نگار خصوصی) پمز ہسپتال اسلام آباد کے ینگ اورریگولرڈاکٹروںکے درمیان ہڑتال کے تنازعہ پر تصادم کے نتیجے میں ایک ڈاکٹر کا بازو ٹوٹ گیا۔ جبکہ مشتعل ینگ ڈاکٹروں نے ہسپتال میں توڑپھوڑ کی اور ایگزیکٹوڈائریکٹرآفس کے شیشے توڑدئیے۔ ہفتہ کوپمز ہسپتال اسلام آباد کے ینگ ڈاکٹروں نے ریگولر ڈاکٹروں کو تین روز سے جاری ہڑتال میں شرکت کی دعوت دی۔ ریگولر ڈاکٹروں کے انکار پر ینگ ڈاکٹروں نے ای ڈی آفس پر دھاوا بول دیا اور توڑ پھوڑ شروع کردی۔ تصادم میں ایک ڈاکٹر کا بازو بھی ٹوٹ گیا۔ ہسپتال انتظامیہ نے ینگ ڈاکٹروں کے ساتھ سختی سے نمٹنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ایگزیکٹو ڈائریکٹر پمز ریاض وڑائچ نے کہا کہ ینگ ڈاکٹرز کے تمام مطالبات مان لیے۔ہسپتال کا امن وامان خراب نہیں ہونے دینگے۔ معاملے کی مکمل تحقیقات کے بعد ملوث عناصر کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ ینگ ڈاکٹر ہڑتال چھوڑ کر مریضوں کی خدمت کریں۔