انتخابی معاملات پر سپریم کورٹ کے فیصلوں نے شفاف الیکشن کی راہ ہموار کر دی

21 اکتوبر 2012


اسلام آباد (طیب بلوچ) عدالت عظمیٰ نے انتخابی معاملات کے متعدد فیصلوں کے ذریعے ملک میں شفاف اور غیرجانبدارانہ انتخابات کی راہ ہموار کر دی ہے جو آئندہ انتخابات میں حقیقی جمہوریت کے فروغ کے لئے معاون ثابت ہوں گے۔ اصغر خان کیس میں تو عدالت نے عوامی منشاءپر اثراندا ہونے والے بیرونی عوامل کو غیرآئینی قرار دیتے ہوئے ان کے خلاف پل باندھا ہے اور ملک میں شفاف انتخابات کو یقینی بنانے کے لئے ایجنسیوں کے کردار کو ہمیشہ کے لئے ختم کر دیا ہے جبکہ عدالت انتخابی فہرستوں میں پہلے ہی سے ساڑھے تین کروڑ بوگس ووٹ کٹوا چکی ہے۔ عدالت عظمیٰ انتخابی مہم کے دوران بے دریغ پیسے کے استعمال پر بھی پابندی لگا چکی ہے۔