بلوچستان عالمی نقشے پر گولڈن سپاٹ بن چکا، بیرونی طاقتوں کی قدرتی وسائل پر نظریں

21 اکتوبر 2012


لندن (تحقیقاتی رپورٹ / خالد ایچ لودھی) بلوچستان میں غیر ملکی قوتیں اپنے مفادات کے لئے علیحدگی پسندوں کی پشت پناہی کر رہی ہیں جبکہ صوبے میں پاکستان سے علیحدگی کی کسی تحریک کا عملی وجود نہیں ہے۔ سفارتی رپورٹس مرتب کرنے والے غیر جانبدار مبصرین کی تازہ رپورٹ کے مطابق بلوچستان اس وقت دنیا کے نقشے پر ”گولڈن سپاٹ “ کی حیثیت اختیار کر چکا ہے اس کے قدرتی وسائل پر مغربی طاقتوں اور بعض خلیجی ریاستوں کی نظریں لگی ہوئی ہیں جس کی بنا پر غیر ملکی خفیہ اداروں کا عمل دخل دن بدن بڑھ رہا ہے۔ افغانستان سے پاکستان میں دہشت گردوں کی آمدورفت کا سلسلہ بھی بدستور جاری ہے۔ اس کے علاوہ امریکی سی آئی اے اور بھارتی خفیہ ایجنسی ”را“ کے ایجنٹ بلوچستان میں اپنے مخصوص مقاصد کے لئے سرگرم عمل ہیں۔ مقامی باشندوں کو بطور ایجنٹ استعمال کیا جاتا ہے۔ افغانستان میں مختلف مقامات پر فراری کیمپ بھی کام کو رہے ہیں جو پاکستان مخالف عناصر کو تربیت فراہم کرتے ہیں۔ غیر جانبدار مبصرین کی رپورٹ کے مطابق بلوچستان میں مذہبی منافرت اور ٹارگٹ کلنگ میں غیر ملکی ہاتھ ملوث ہیں۔