ہوا سے پٹرول بنانے کا تجربہ کامیاب

21 اکتوبر 2012

لندن (بی بی سی اردو) پٹرول پیدا کرنے کا ایک نیا طریقہ تجویز کیا گیا ہے جس میں ہوا سے کاربن ڈائی آکسائیڈ اخذ کرنے کے بعد اسے پانی سے حاصل کی گئی ہائیڈروجن گیس سے ملا کر ایندھن بنانے کی بات کی گئی ہے۔ لیکن سائنسدان کہتے ہیں کہ ایندھن کے معاملے میں کچھ بھی مفت حاصل نہیں ہوتا جیسے پودوں کو کاربن ڈائی آکسائیڈ اور پانی سے توانائی کے لئے سورج کی ضرورت پڑتی ہے بالکل اسی طرح ہوا سے پٹرول حاصل کرنے کے لئے بجلی کی ضرورت پڑے گی۔ ماہرین کا کہنا ہے کاربن ڈائی آکسائیڈ کو توانائی سے بھرے خلیوں کو تبدیلی کرنے کا خیال نیا نہیں۔ 1994ءمیں امریکہ کی پرنسٹن یونیورسٹی میں اس کے بارے میں ایک رپورٹ شائع کی گئی تھی۔ حال ہی میں ایک لکویڈ لائٹ نامی کمپنی نے بھی اس تکنیک کو استعمال کرنا شروع کیا ہے۔ انیس لینڈ میں کاربن ری سائیکلنگ انٹرنیشنل نے 2011ءمیں ایک پلانٹ کا افتتاح کیا جس میں دوسری فیکٹریوں سے خارج ہونے والی کاربن ڈائی آکسائیڈ سے سالانہ 50لاکھ لیٹر میتھنال تیار کی جاتی ہے۔ فرم کے سربراہ پیٹر ہیریسن نے بی بی سی کو بتایا کہ تجرباتی مرحلے میں اس عمل پر آنے والی لاگت سے زیادہ توجہ کاربن ڈائی آکسائیڈ سے توانائی حاصل کرنے کے اصول کو درست ثابت کرنے پر مرکوز تھی۔ برطانیہ میں ہم صرف یہ ثابت کرنا چاہ رہے تھے کہ ہوا سے پٹرول بنایا جا سکتا ہے۔