علی گیلانی ‘ میر واعظ اور دیگر حریت قائدین کو دورہ پاکستان کی باضابطہ دعوت

21 اکتوبر 2012
علی گیلانی ‘ میر واعظ اور دیگر حریت قائدین کو دورہ پاکستان کی باضابطہ دعوت

اسلام آباد/ سرینگر (آئی این پی) پاکستان نے مسئلہ کشمیر کے حوالے سے غیر معمولی پیش رفت کے تحت مسئلہ کے جلد اور کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق حل کیلئے کشمیری قیادت سے بات چیت کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے علی گیلانی‘ میرواعظ عمر فاروق اور شبیر احمد شاہ سمیت حریت کانفرنس کے دونوں دھڑوں کے مجلس شوری ارکان کو ماہ دسمبر میں پاکستان کا دورہ کرنے کی باضابطہ دعوت دیدی۔ اس دوران سابق حریت چیئرمین اور مسلم کانفرنس کے سربراہ پروفیسر عبدالغنی بٹ سرینگر سے نئی دہلی روانہ ہو گئے جہاں سے وہ پاکستان جائیں گے۔ وزیر خارجہ حنا ربانی کھر کی طرف سے بھیجے گئے دعوت نامے ڈپٹی ہائی کمشنر بابر امین نے پہنچائے۔ حریت کانفرنس کے دونوں دھڑوں کے ذرائع نے پاکستان کا دورہ کرنے کی دعوت دئیے جانے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ عید الاضحی اور پاسپورٹ دستیاب ہونے کے بعد مجوزہ دورہ پاکستان کا حتمی فیصلہ اور لائحہ عمل مرتب کیا جائے گا۔ حریت کانفرنس جن دیگر لوگوں کو پاکستانی دورے کی دعوت دی گئی ان میں شبیر احمد شاہ ،پروفیسر عبدالغنی بٹ ، مولانا عباس انصاری، بلال غنی لون ، مختار احمد وازہ، مصدق عادل اور آغا سید حسن شامل ہیں۔ علی گیلانی نے ٹیلفونک بات چیت کے دوران پاکستان کے ڈپٹی ہائی کمشنر بابر امین کو بتایا کہ وہ پاکستانی قیادت کی کشمیریوں کیلئے تڑپ اور محبت سے آگاہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر کے عوام کی امیدوں اور امنگوں کا مرکز ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی سرکار نے ان کا پاسپورٹ ضبط کر رکھا ہے میرے پاس کسی ملک کا دورہ کرنے کیلئے سفری دستاویزات نہیں ہے اس لئے فی الحال وہ پاکستان کا دورہ نہیں کر سکتے۔ دریں اثناءپاکستان کے ہائی کمشنر سلمان بشیر نے حریت رہنما میرواعظ کو بھی فون کیا اور انہیں حریت ایگزیکٹو ارکان سمیت ماہ دسمبر میں پاکستان کا دورہ کرنے کی باضابطہ دعوت دی۔