پاکستان اور بھارت میں سیاچن پر اتفاق رائے نہیں ہو سکا: اے کے انتھونی

21 اکتوبر 2012

نئی دہلی (اے پی اے ) بھارتی وزیر دفاع اے کے انتھونی نے 1962ءکی چین کے ساتھ جنگ میں مارے جانے والوں کو پہلی بار خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہماری مسلح افواج کسی بھی بیرونی حملے کیخلاف ملک کے دفاع کیلئے پراعتماد اور تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بھارت چین کے ساتھ کسی بھی تصادم اور محاذ آرائی پر یقین نہیں رکھتا۔ ان کا کہنا تھا کہ بھارت اس پالیسی پر قائم ہے کہ ایشیائی بحرالکاہل میں طاقت کا غیر متوازن ہونا درست نہیں ہے اور عالمی پانیوں میں سب کے لئے آزادانہ گزرگاہیں ہونی چاہئیں۔ انہوں نے کہاکہ چین بھارت جنگ کے بعد ہم نے اپنی عسکری طاقت کو مزید مضبوط کیا ہے۔ ہماری دفاعی صلاحیت میں اب کئی گنا اضافہ ہوچکا ہے اور ہم اپنی سرزمین کے ایک ایک ٹکڑے کا دفاع کرنے کیلئے تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم چین کے ساتھ راہداری تعلقات کو بہتر بنانے سمیت دیگر ایشوز پر بھی مذاکرات جاری رکھے ہوئے ہیں۔ ہم اپنے سائبر اثاثوں کے تحفظ کے حوالے سے پ±راعتماد ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان اور بھارت کے درمیان سیاچن کے معاملے پر تاحال اتفاق رائے نہیں ہوسکا البتہ دونوں ممالک نے اس مسئلے کا قابل عمل حل تلاش کرنے کے عزم کو دہرایا ہے۔ ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر سے بھارتی فوج میں نوجوانوں کی بھرتی معمول کی بنیاد پر کی جا رہی ہے۔ مقبوضہ کشمیر میں شدت پسندوں کی کارروائیوں میں کمی آئی ہے اور صورتحال بہتر ہو رہی ہے۔