مسلم لیگ (ن) یا پیپلز پارٹی سے اتحاد کا فیصلہ کل کرینگے: شجاعت

21 مارچ 2009
لاہور(خصوصی رپورٹر + این این آئی) مسلم لیگ (ق) پنجاب کی پارلیمانی پارٹی نے پارٹی قیادت پر زور دیا ہے کہ وہ پچھلے عام انتخابات میں پارٹی کو ملنے والے مینڈیٹ کا دفاع کرے اور آئین کی واضح اور کھلم کھلا خلاف ورزی کرنے والے فارورڈ بلاک کے ارکان کو فوری شوکاز نوٹس دے کر ان کی رکنیت ختم کی جائے جبکہ صوبہ میں جمہوریت اور مینڈیٹ کے احترام کی باتیں کرنے والے دیگر جماعتوں کے قائدین جمہوری اقدار اور ہماری پارٹی کو حاصل مینڈیٹ کے احترام کا عملی مظاہرہ کریں اور فارورڈ بلاک کی سیاست کی بجائے میثاق جمہوریت پر عملدرآمد اور اس کے اطلاق کیلئے کوشش کریں شجاعت نے کہا کہ مسلم لیگ ن یا پی پی سے اتحاد کا فیصلہ کل کرینگے ۔ ان خیالات کا اظہار مسلم لیگ ق پنجاب کی پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں کیا گیا جس کی صدارت پرویزالٰہی نے کی جبکہ پارٹی کے صدر شجاعت بھی موجود تھے۔ اجلاس میں پارٹی کے ارکان پنجاب اسمبلی کی واضح اکثریت نے شرکت کی اور فارورڈ بلاک میں شامل ارکان اسمبلی کی سرگرمیوں کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ یہ لوگ جنہوں نے اپنی مرضی سے مسلم لیگ کا ٹکٹ حاصل کیا اور اس ٹکٹ پر منتخب ہونے کے بعد اب پارٹی مفاد کے منافی سرگرمیوں میں مصروف ہیں اور نہ صرف پارٹی کے فیصلوں کی کھلم کھلا خلاف ورزی کر رہے ہیں بلکہ مسلم لیگ ن کی پنجاب پارلیمانی پارٹی کے ہر اجلاس میں باقاعدہ شریک ہوتے ہیں۔ جس کے باعث ڈیفیکشن کلاز 63 اے کی ضمنی دفعہ a کے تحت اسمبلی میں ان کی رکنیت ختم ہو سکتی ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ فارورڈ بلاک کے ان ارکان کو فوری طور پر شوکاز نوٹس جاری کرکے ان کی رکنیت کے خاتمے کیلئے کارروائی کی جائے۔ شجاعت اور پرویز الٰہی نے اجلاس میں شریک ارکان کی پارٹی سے وابستگی اور ہر قسم کی دھونس، دھاندلی اور لالچ کے باوجود پارٹی کا ساتھ دینے پر زبردست خراج تحسین پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں جمہوریت کو مضبوط بنانے کیلئے ضروری ہے کہ پچھلے سال 18 فروری کو پاکستان کے عوام نے جس پارٹی کو جو مینڈیٹ دیا تھا اسے اغوا یا پامال نہ کیا جائے۔ فارورڈ بلاک اور زور زبردستی کی بجائے افہام و تفہیم کی سیاست کو فروغ دیا جائے۔ وقتی سیاسی فائدے کیلئے فارورڈ بلاکوں کی غیر جمہوری سیاست کی حوصلہ افزائی نہ کی جائے اور آئین کی من مانی تاویلوں کی بجائے وفاداریاں تبدیل کرنے سے متعلق پارٹی وفاداریاں تبدیل کرنے کی واضح شق اور اس کے مقاصد کو پیش نظر رکھا جائے۔
اجلاس