انقلاب کے بغیر حالات ٹھیک نہیں ہو سکتے‘ پارلیمنٹ نے مسائل حل نہ کئے تو فیصلے سڑکوں پر ہونگے : نواز شریف

21 مارچ 2009
لاہور ( خبر نگار خصوصی + ایجنسیاں) مسلم لیگ (ن) کے سربراہ نواز شریف نے کہا ہے کہ انقلاب کے بغیر معاملات درست نہیں ہو سکتے ۔ 16 مارچ کو انقلاب آیا اور معاملات آگے بڑھے مارچ میں مارچ شروع کیا اگلے مارچ تک اپنا ایجنڈا پورا کر لیں گے۔ ہمارا ایجنڈا صحت و تعلیم کی سہولتیں دینا‘ آزاد عدلیہ ریاستی اداروں کی مضبوطی ملک میں استحکام‘ غربت‘ بیروزگاری کا خاتمہ عوام کی خوشحالی ہے۔ یہ مقاصد حاصل کر کے دم لیں گے‘ ہمارے ایجنڈے کی تکمیل میں جو رکاوٹیں ہیں اگر وہ دور نہ ہوئیں تو عوام خود دور کر لیں گے۔ گذشتہ روز ملک بھر سے آنے والے کارکنوں سے بات چیت کرتے ہوئے نواز شریف نے بعض پارٹی عہدیداروں سے بھی ملاقات کی اور 23 مارچ کے جنرل کونسل کے اجلاس کے حوالہ سے تبادلہ خیال کیا۔ نواز شریف نے عہدیداروں اور کارکنوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں عوام کے اعتماد پر پورا اترنا اور پاکستان کو ترقی و خوشحالی کی منزل پر لے جانا ہے جس کے لئے جدوجہد جاری رہے گی عوام خود اپنی تقدیر بدلنے کے لئے دوران عمل میں ہیں لہٰذا ان کا راستہ روکا نہیں جا سکتا۔ جسے ہی عوام 16 مارچ کو سڑک پر آئے ایک سکینڈ میں مطالبہ پورا ہو گیا۔ 16 مارچ کا انقلاب مشعل راہ ہے عوام کی طاقت کو انقلاب کے لئے بروئے کار لائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ 16 مارچ کو عوامی خواہشات کے مطابق انقلاب آیا‘ آئندہ مارچ تک قومی ایجنڈا میں جو بھی حائل ہوا قوم پھر سڑکوں پر آ کر ان تمام رکاوٹوں کو ملیامیٹ اور تباہ کر دے گی‘ پرانا نظام بدلنا ہو گا۔ انقلاب کے بغیر حالات ٹھیک نہیں ہو سکتے ۔ قومی ایجنڈے کی تکمیل میں حکومت اور چند قوتیں حائل ہیں‘ عدلیہ کی بحالی تبدیلی کا آغاز تھا اور قومی ایجنڈا کی تکمیل ہماری منزل ہے‘ عوام نے اسی طرح ساتھ دیا تو پرانے نظام سے چھٹکارا حاصل کر لیں گے۔ انہوں نے نے کہا کہ اگر عوامی مسائل حل کرنے کیلئے فیصلے پارلیمنٹ میں نہ ہوئے تو پھر یہ فیصلے سڑکوں پر کئے جائیں گے۔ دو سال سے ججوں کا مسئلہ حل کرنے کیلئے پارلیمنٹ نے کچھ نہیں کیا جس پر عوام کو مجبوراً سڑکوں پر آکر زور بازو سے یہ مسئلہ حل کرنا پڑا۔ لانگ مارچ نے ثابت کر دیا کہ عوام اپنی قوت سے بھی مسائل حل کروانے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ پاکستان کو قائداعظم محمد علی جناح کا پاکستان بنانے کیلئے ایک اور انقلاب کی ضرورت ہے اور عوام اس انقلاب سے ملک کی تقدیر بدل دیں گے۔ انہوں نے کارکنوں سے کہا کہ وہ حکومت میں ہوں یا اپوزیشن میں اگر غلط کام کریں تو وہ ان کا راستہ بھی روکیں۔ اگر صدر آصف علی زرداری وعدے ایفا کر دیتے تو لانگ مارچ کی نوبت نہ آتی۔ وہ قوم کے ساتھ مل کر جدوجہد کریں گے اور اس مقصد کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ انہوں نے کارکنوں پر مسلم لیگ (ن) کی تنظیم سازی کی مہم بھی بھرپور سے چلانے کی ہدایت کی۔
نوازشریف