لاہورہائی کورٹ نے پی سی ایس افسران کے خلاف جاری کارروائیوں پرتا حکم ثانی حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے حکومت پنجاب سے جواب طلب کر لیا ۔

21 اپریل 2011 (04:44)
پی سی ایس افسران کی جانب سے دائر کی گئی رٹ درخواست میں موقف اختیار کیا گیا تھا کہ صوبائی حکومت انکے خلاف کارروائیاں کر رہی ہے۔ پی سی ایس افسران کے وکیل حامد خان نے عدالت کو بتایا کہ پنجاب حکومت جانبدار ہے اور اس کی جانب سے جاری کیے گئے نوٹس بدنیتی پر مبنی ہیں لہذا عدالت انہیں کالعدم قرار دے۔ سماعت کے بعد عدالت عالیہ نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ بظاہر لگتا ہے کہ پی سی ایس افسران کے خلاف جانبداری برتی جا رہی ہے۔ عدالت نے تفصیلی جواب طلب کرتے ہوئے پنجاب حکومت کو پی سی ایس افسران کے خلاف جاری کارروائیوں پر کوئی بھی حتمی فیصلہ کرنے سے روک دیا ۔ کیس کی مزید سماعت پانچ مئی کو ہوگی