صابرا اور شتیلا میں فلسطینیوں کے قتل عام میں امریکہ بھی ملوث تھا: فرانسیسی اخبار کا انکشاف

20 ستمبر 2012
صابرا اور شتیلا میں فلسطینیوں کے قتل عام میں امریکہ بھی ملوث تھا: فرانسیسی اخبار کا انکشاف

پیرس (ثناءنیوز) فرانس کے ایک کثیرالاشاعت اخبارلی مونڈ نے انکشاف کیا ہے کہ ستمبر1982ءمیں بیروت میں فلسطینی مہاجر کیمپ صابرا اور شاتیلا میں اسرائیلی فوج کی دہشت گردی میں امریکہ بھی ملوث تھا ۔ خیال رہے کہ 16 اور 17 ستمبر1982 کو فلسطینی مہاجرین کے کیمپ پر اسرائیلی فوج نے جنرل ایرئیل شیرون کی کمان میں حملہ کردیا تھا ۔ حملے کے نتیجے میں تین ہزارنہتے فلسطینیوں کو خون میں نہلا دیا گیا تھا ۔ مہاجر کیمپوں میں قتل عام کے دوران اس وقت کے امریکی صدر ریگن اسرائیلی جنرل شیرون کے ساتھ رابطے میں تھے اورآپریشن موضوع بحث رہا۔