گستاخانہ فلم کے خلاف مذہبی و سیاسی جماعتوں کا 26 ستمبر کو اے پی سی بلانے کا فیصلہ

20 ستمبر 2012

لاہور (خصوصی نامہ نگار) مذہبی و سیاسی جماعتوں نے گستاخانہ امریکی فلم کے خلاف متفقہ طور پر ”قومی مجلس مشاورت برائے تحفظ حرمت رسول“ کے عنوان سے 26 ستمبر کو آل پارٹیز کانفرنس کے انعقاد کا فیصلہ کیا ہے۔ اس سلسلہ میں گذشتہ روز مولانا سمیع الحق، منور حسن، مولانا فضل الرحمن، صاحبزادہ ابوالخیر زبیر، پروفیسر حافظ محمد سعید، جنرل (ر) حمید گل اور دیگر کے درمیان رابطے ہوئے اور باہمی مشاورت سے اس بات کا فیصلہ کیا گیا کہ نبی اکرم کی شان اقدس میں گستاخیاں روکنے کے لئے کسی ایک جماعت کی بجائے ملک بھر کی تمام مذہبی و سیاسی جماعتیں متحد ہو کر اس انتہائی اہم مسئلہ پر قومی مجلس مشاورت کا انعقاد کریں تاکہ دنیا کو مضبوط پیغام دیا جا سکے کہ تحفظ حرمت رسول کے مسئلہ پر ملک بھر کی مذہبی و سیاسی قیادت ایک پلیٹ فارم پر جمع ہے اور نبی کی شان اقدس میں گستاخیوں کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جا سکتا۔ قومی مجلس مشاورت میں عسکری ماہرین، وکلا، طلبا، تاجروں، سول سوسائٹی اور دیگر شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات کو بھی شریک کیا جائے گا۔ علاوہ ازیں امیر جماعة الدعوة حافظ محمد سعید نے کہا ہے کہ فرانسیسی میگزین میں گستاخانہ خاکوں کی اشاعت سے ایک بار پھر یہ بات واضح ہو گئی کہ امریکہ اور یورپ منظم منصوبہ بندی کے تحت جان بوجھ کر گستاخیاں کر رہے ہیں۔ گستاخانہ فلم بنانے اور چلانے والوں کو پھانسی کے پھندے پر لٹکایا جائے اور عالمی سطح پر توہین انبیاءکی شان میں گستاخی کی سزا موت کا قانون پاس کیا جائے۔ کل جمعة المبارک کو ملک گیر یوم احتجاج منایا جائے گا۔ پانچوں صوبوں و آزاد کشمیر میں حرمت رسول مارچ، احتجاجی مظاہروں اور ریلیوں کا انعقاد کیا جائے گا۔ صلیبیوں و یہودیوں نے گستاخیاں بند نہ کیں تو مسلمان ان کی دہشت گردی کے خلاف قربانیوں و شہادتوں کا راستہ اختیار کریں گے۔ امت مسلمہ متحد و بیدار ہو چکی صلیبیوں و یہودیوں کو اب گستاخیاں نہیں کرنے دیں گے۔ق لیگ کے صدر چودھری شجاعت حسین نے حافظ سعید کو فون کرکے کہا ہے کہ حرمت رسول کانفرنس میں شرکت کرینگے اور جمعہ کو بھرپور احتجاج کریں گے۔