کراچی میں تشدد نہ رک سکا، مزید 5 افراد جاںبحق، مطلوبہ دہشت گرد گرفتار

20 مئی 2012
کراچی (سٹاف رپورٹر + آئی اےن پی) کراچی میں قانون نافذ کرنے والے اداروں کے تمام تر دعووں کے باوجود فائرنگ سے ہلاکتوں کا سلسلہ رک نہ سکا، شہر مےں فائرنگ اور تشدد کے مختلف واقعات مےں مزےد 5 افراد جاںبحق ہو گئے۔ پولےس کے مطابق شہید ملت روڈ پر نامعلوم افراد نے کار پر فائرنگ کر دی جس کے نتیجے میں مقامی بلڈر سلمان اعظم جاںبحق ہو گیا۔ مواچھ گوٹھ سے نامعلوم شخص کی تشدد زدہ لاش ملی، لیاری دھوبی گھاٹ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے نوجوان ندیم جاںبحق ہو گیا جبکہ لیاری کے ہی علاقے کھڈہ مارکیٹ سے نوجوان جاںبحق ہوا۔ سی آئی ڈی پولیس نے مبینہ ٹاون میں کارروائی کے دوران مطلوب دہشت گرد خان برکی عرف ڈاکٹر کو گرفتار کر کے ایک کلاشنکوف برآمد کر لی۔ ملزم کا تعلق ایک سیاسی جماعت سے ہے۔ ممتاز بلڈرز سلمان اعظم کے قتل کے بعد بلڈرز میں خوف و ہراس پھیل گیا اور کراچی کے تعمیراتی منصوبوں پر کام بند ہو گیا اور بلڈرز ہسپتال پہنچ گئے۔ محبت کی شادی کرنے والے عبدالسلام کے قتل کے بعد ان کی نعش لینے کے لئے بلوچستان سے آنے والے اس کے دونوں بھائیوں کو بھی قتل کر دیا گیا اور ماں جب اپنے بیٹوں کی نعشیں لینے پہنچی تو اس پر بھی گولیاں چلائی گئیں۔ پولیس پریشان ہے کہ ایک ہی خاندان کی کراچی میں سیریل کلنگ کیوں کی گئی۔ پہلے ایک اور اب 5 افراد کی نعشیں سرد خان میں ہیں اور 3 بیٹوں کی نعشیں لینے کے لئے آنے والی ماں ہسپتال میں زیر علاج ہے۔