عمران کے ایکطرف قرضے معاف کرنے، دوسری جانب لوگوں کی اربوں روپے کی زمین ہڑپ کرنیوالے کھڑے ہیں: شہباز شریف

19 اکتوبر 2016 (19:46)

وزیر اعلی پنجاب اور مسلم لیگ (ن) پنجاب کے نومنتخب صدر میاں محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ سپریم کورٹ ان پر لگائے جانے والے الزامات کی سماعت کے لئے فل کورٹ بنچ تشکیل دے اگر وزیراعظم نواز شریف یا مجھ پر کرپشن کا ایک پیسہ بھی ثابت ہو جائے تو ہمیشہ کیلئے سیاست چھوڑ دوں گا - انہوںنے کہا کہ اسلام آباد کو بند کرنے کی دھمکیاں دینے والے عمران خان کے ایک طرف قرضے معاف کرانے اور دوسری طرف لوگوں کی اربوں کھربوں روپے کی زمینیں ہڑپ کرنے والے اشخاص کھڑے ہیں - انہوںنے کہا کہ پی ٹی آئی نے اورنج لائن منصوبے کے خلاف سپریم کورٹ میں پارٹی بن کر ثابت کر دیا کہ اورنج لائن ٹرین منصوبہ ، سی پیک ، بجلی کے پیداواری منصوبوں اور دیگر ترقیاتی و فلاحی منصوبوں میں رکاوٹیں ڈالنے کے پیچھے تحریک انصاف کھڑی ہے اگر چہ پی ٹی آئی نے درخواست واپس لے لی لیکن کمان سے نکلا ہوا تیر واپس نہیں آتا۔انہوں نے کہا کہ اگلے سال کے اندر بجلی کے منصوبے مکمل اور ملک بھر میں بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ ہو جائے گا ۔ چین ہمارا محسن ہے جس نے سی پیک کے تحت پاکستان کو 46 ارب ڈالر کا پیکج دیا جس میں سے 36 ارب ڈالر بجلی کے منصوبوں کیلئے ہیں جبکہ 150 ارب روپے وہ اورنج لائن ٹرین کے منصوبے پر خرچ کر رہا ہے جس میں سے 45 ارب روپے ہمیں مل چکے ہیں ۔ پی ٹی آئی ان منصوبوں کے خلاف چین کی مخالفت کر رہی ہے حالانکہ دنیا میں چین ہمارا سب سے بڑا محسن ہے جس کا ہماری آئندہ نسلوں کو بھی شکر گزار رہنا چاہیے۔ ان خیالات کا اظہار انہوںنے  ایکسپو سنٹر لاہور میں مسلم لیگ ن پنجاب کا دوبارہ بلا مقابلہ صدر منتخب ہونے کے بعد مسلم لیگ (ن) پنجاب کی جنرل کونسل سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ میاں شہباز شریف نے کہا کہ وہ کونسل کے ارکان کے شکر گزار ہیں کہ انہوںنے ان پر دوبارہ اعتماد کا اظہار کیا۔ انہوںنے کہا کہ انتخابات میں اٹھارہ ماہ رہ گئے ہیں مخالفین کو علم ہے کہ اگر ملک بھر میں شروع کئے گئے ترقیاتی منصوبے مکمل ہو گئے اور پندرہ سال سے جاری بجلی کی لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ ہو گیا تو وہ کہیں کے نہیں رہیں گے اور وہ دوبارہ ملک میں دھرنے دینے اور اسلام آباد کو جام کرنے کی آوازیں بلند کرنے لگے ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ بجلی کے منصوبوں، میٹروبس اسلام آباد، میٹروبس ملتان ، میٹروبس لاہور ، سیف سٹی پراجیکٹس سمیت دیگر کسی بھی ترقیاتی منصوبے میں مجھ پر یا وزیر اعظم نواز شریف پر ایک پیسے کی بھی کرپشن ثابت ہو جائے تو آپ کا ہاتھ اور میرا گریبان ہو گااور میں ہمیشہ کیلئے سیاست سے الگ ہو جاؤں گا۔ میاں شہباز شریف نے کہا کہ ملک اور قوم اسی طرح وزیر اعظم نواز شریف کی قیادت میں ترقی کا سفر طے کرتے رہیں گے۔ آئندہ سال بجلی کے منصوبے مکمل ہونے کے بعداندھیرے ختم ہو جائیں گے ۔ شہروں، دیہاتوں، سکولوں، کالجوں اور زراعت سمیت ہر جگہ روشنی ہی روشنی ہو گی - اس سے بڑا انقلاب اور پاکستان کی خدمت اور اللہ تعالی کا کرم کیا ہو سکتا ہے پھر اسلام آباد کو بند کرنے کی سازش کیوں ہورہی ہے ۔ پاکستان کی ترقی کا سفر اور سی پیک میں خلل ڈالنے کی سازشیں کیوں کی جا رہی ہیں ۔ دراصل انہیں معلوم ہے کہ آئندہ اٹھارہ ماہ میں پاکستان کی تقدیر بدلنے والی ہے۔جب زراعت اور صنعتیں آگے بڑھیں گی لاکھوں نوجوانوں کو روزگار ملے گا ۔ پاکستان کی معیشت مستحکم ہو گی اور پاکستان دوبارہ اپنے پاؤں پر کھڑا ہو گا اورملک کی ریڑھ کی ہڈی زراعت کو تقویت ملے گی۔ پاکستان اقوام عالم میں اپنا کھویا ہوا مقام دوبارہ حاصل کرے گا۔ ان کو یہی تکلیف ہے اور ان کے یہی اہداف ہیں ۔ انہوںنے کہا کہ یہ پاکستان کے خلاف دھرنے دے کر اسلام آباد بند کرنا چاہتے ہیں ، انہیں بند چاہیے تو لاہور کی کسی دکان پر چلے جائیں انہیں درجنوں بند مل جائیں گے۔ انہوںنے کہا کہ جس شخص نے پچاس کروڑ روپے کے قرض معاف کروائے وہ ٹی وی پر بیٹھ کر کہہ رہا ہے کہ اس نے تین کروڑ روپے کا ٹیکس دیا ہے وہ عوام کو دھوکہ دینے کی کوشش کر رہا ہے ۔ عمران کی دوسری طرف قبضہ گروپ ہے جس نے لاہور میں غریبوں اور بیواؤں و دیگر شہریوں کے اربوں ، کھربوں روپے کے پلاٹس ہڑپ کر لئے اور اب وہ احتساب کی بات کرتا ہے۔ انہوںنے کہا کہ عمران خان کہتے ہیں کہ وہ سی پیک کے مخالف نہیں ہیں جبکہ ان کے وزیراعلی صوبہ خیبر پی کے میں سی پیک اور چین کی مخالفت کرتے ہیں۔ انہوںنے کہا کہ دنیا بھر میں کیا کوئی بھی ایسا ملک ہے جس نے اتنے بڑے پیمانے پر کسی ملک میں سرمایہ کاری کی ہو جتنی چین نے پاکستان میں کی ہے جس کے لئے میاں نواز شریف نے شب و روز کام کیا اور چین کے گھٹنے تک پکڑے کہ وہ پاکستان میں سرمایہ کاری کرے۔ ہمیں تو چین کا ہمیشہ کیلئے شکر گزار رہنا چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ اورنج لائن ٹرین کا منصوبہ صرف لاہور یا پنجاب کا نہیں بلکہ پورے پاکستان کا منصوبہ ہے،جسے دیکھنے پورے پاکستان سے لوگ آئیں گے اور اس پر سفر کریں گے۔منصوبہ مکمل ہونے کے بعد عوام ڈھائی گھنٹے کا سفر تیس سے پینتالیس منٹ میں کر سکیں گے۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف سے لاہور میں چینی کمپنی ہاربن الیکٹرک انٹرنیشنل کے چیئرمین گوایو نے ملاقات کی، ملاقات میں دونوں رہنماوں کے درمیان توانائی منصوبوں پر تبادلہ خیال کیاگیا۔ملاقات کے دوران وزیراعلیٰ شہباز شریف نے کہا کہ توانائی منصوبوں کیلئے چین کے تعاون کو قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں،پنجاب میں گیس پاور منصوبوں پر تیزی سے کام جاری ہے،ان منصوبوں کی تکمیل سے 3ہزار600 میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ قومی نوعیت کے ان اہم منصوبوں کی تکمیل سے نہ صرف لوڈشیڈنگ میں خاطرخواہ کمی واقع ہوگی،بلکہ بجلی کی قیمت میں کمی بھی آئے گی۔